Dr Muhammad Farhan Khan

Dr. Muhammad Farhan Khan
MBBS, MCPS, RMP
General Physician, Diabetologist
8 years of vast clinical Member American Diabetes Association
Member Royal College of General Practioner

Operating as usual

10/07/2022

Happy eid greetings

Dr Muhammad Farhan Khan updated their address. 14/06/2022

Dr Muhammad Farhan Khan updated their address.

Dr Muhammad Farhan Khan updated their address.

Dr Muhammad Farhan Khan is now on WhatsApp. 14/06/2022

Dr Muhammad Farhan Khan is now on WhatsApp.

Dr Muhammad Farhan Khan is now on WhatsApp.

Dr Muhammad Farhan Khan is now on WhatsApp. 14/06/2022

Dr Muhammad Farhan Khan is now on WhatsApp.

Dr Muhammad Farhan Khan is now on WhatsApp.

Dr Muhammad Farhan Khan is now on WhatsApp. 14/06/2022

Dr Muhammad Farhan Khan is now on WhatsApp.

Dr Muhammad Farhan Khan is now on WhatsApp.

13/08/2021

Happy independence day to all page members

21/07/2021

May Allah accept from us and from you the righteous words and deed.
Eid Mubarak to All.
❤Takabbalallahu minna wa minkum...❣️
Regards
DR FARHAN

15/06/2021

Public service message

13/05/2021

Eid greetings to All my page members

09/05/2021

I pray Allah SWT to accept our duas, fasting and supplications on#Lailatul Qadr and bless us with His mercy and forgiveness
Allah SWT may shower His countless bounties and protect us all and bless our Kashmir and the Muslim ummah with peace and prosperity
'Allahumma innaka afuwwun Tuhibbul afwa fa'fu'anni.(AaMeeN)
qadar

21/04/2021

Ramadan timings
3pm to 6pm
8pm to 10pm monday to Saturday
Sunday off

13/04/2021
29/03/2021

I was tested covid positive 10 days ago, developed covid pneumonia afterwards. Under going supportive treatment. I request all my page members for my speedy recovery. I am regretful if i am not responding to calls and watsapp messages because of my health issues. I hope everyone will understand the situation.
Will resume all my clinical efforts and ease to patients after my full recovery.i request every member to please stay safe and prevent yourself at the most from this deadly virus.
With best regards and talibe dua
Dr Farhan.

Home 19/03/2021

Home


شوگر کا مرض میں روزے کی راہ میں رکاوٹ نہیں ہے بس تھوڑی سے احتیاط کی ضرورت ہے۔شوگر کے مریض عام افراد کی طرح ماہ رمضان کی برکتیں سمیٹ سکتے ہیں۔ پاکستان میں شوگر کے مریضوں کی تعداد 70 لاکھ سے زائد ہے۔ اور ماہ صیام میں شوگر کے مرض میں مبتلا افراد بھی روزہ جیسی عبادت کی تمام برکات سمیٹ سکتے ہیں لیکن دی ڈائیابیٹس سنٹر پاکستان آپ کو مشورہ دیتا ہے کہ اس کے لئے ضروری ہے کہ معالج سے لازمی مشورہ کیا جائے۔
اگر آپ زیابیطس کے مریض ہیں تو زیر نظر معلومات خود بھی پڑھیں اور سب کے ساتھ ابھی شئیر کریں۔ ان معلومات کے بعد آپ بھی رمضان میں انجوائے کرسکتے ہیں صحت اور عافیت کے ساتھ۔انشااللہ

ذیابیطس یا عرف عام شوگر کا مرض ایک ایسی بیماری ہے جس میں انسولین کی کمی یا انسولین کے اثر میں خرابی کی وجہ سے خون میں شوگر کی زیادتی ہو جاتی ہے۔

شوگر کی بہت سی اقسام ہیں لیکن عموماً ذیابیطس کو دو بڑی اقسام میں تقسیم کرتے ہیں۔ٹائپ ون ذیابیطس بچوں اور چھوٹی عمر کے نوجوان میں ہوتی ہے۔ اس قسم کی شوگر میں لبلبہ انسولین بنانا ترک کر دیتا ہے۔ ایسے مریضوں کو ہر صورت میں انسولین بطور علاج استعمال کرنا پڑتی ہے۔ انسولین استعمال نہ کرنے کی صورت میں شدید پیچیدگیاں پیدا ہو سکتی ہیں جو کہ جان لیوا بھی ہو سکتی ہیں۔ لہٰذا ان مریضوں کو چاہئے کہ وہ روزہ نہ رکھیں

۔ٹائپ ٹو ذیابیطس میں انسولین تو موجود ہوتی ہے لیکن مختلف وجوہات کی بنا پر انسولین جسم میں شوگر کنٹرول کرنے میں ناکام رہتی ہے۔ جس کی وجہ سے خون میں شوگر کی زیادتی ہو جاتی ہے۔ 90-95 فیصد مریض شوگر کے مرض کی اسی قسم سے تعلق رکھتے ہیں۔ یہ عام طور پر 40 سال کی عمر کے بعد اور موٹے لوگوں میں زیادہ ہوتی ہے۔ اس قسم کے شوگر کے مریض سحری کے وقت کم گھی والا پراٹھا اور دہی ، افطاری کے وقت ایک سے دو کھجور کھا سکتے ہیں۔

مریض کو شوگر کی دوائیاں اپنے معالج کی ہدایت پر استعمال کرنی چاہیں۔ روزہ رکھتے ہوئے اگر آپ کی شوگر سحری سے پہلے80 سے 110، سحری کے دو گھنٹے بعد، 140 سے 200 تک، دن12 بجے کے قریب، 120 سے 180 تک اور افطار سے پہلے 80 سے لے کر 120 تک رہتی ہے تو آپ باآسانی روزہ رکھ سکتے ہیں۔

شوگر کے ایسے مریض جن کی شوگر کنٹرول میں نہ رہتی ہو، جو ماضی قریب میں بہت زیادہ بیمار ہوں، جن کے گردے، آنکھیں یا اعصاب ذیابیطس سے شدید متاثر ہو چکے ہوں، گردوں کا ڈائلسس کرانے والے اور حاملہ خواتین کو روزہ رکھنے سے اجتناب کرناچاہئے۔

دوران رمضان غذا میں تازہ پھل، سبزیاں اور دہی کا استعمال کیا جائے شوگر کے مریضوں کے لئے فائدہ مند ہے۔ جب کہ افطار میں صرف 2 زیادہ سے کھجوریں کھانے سے پرہیز کرنا چاہئے۔ رمضان المبارک ویسے بھی ہماری زندگی میں نظم و ضبط لاتا ہے اور اگر شوگر کے مریض ذرا سے احتیاط سے کام لیں تو وہ بھی عام لوگوں کی طرح باآسانی روزہ رکھ سکتے ہیں۔

شوگر کی علامات میں پیاس کا لگنا‘ پیشاب کی زیادتی اور بار بار آنا‘ وزن کی کمی‘ جسم میں دردوں کا ہونا‘ ہاتھ پاؤں میں سنسناہٹ کا ہونا‘ جلد کے امراض مثلاً خارش‘ پھوڑے یا پھنسی کا ہونا‘ زخم کا جلد ٹھیک نہ ہونا‘ دانتوں اور مسوڑھوں میں تکلیف ہونا‘ نظر کمزور ہونا‘ لیکن کبھی ایسا بھی اتفاق ہوتا ہے کہ مریض میں مندرجہ بالا کوئی علامات نہیں پائی جاتی۔بلڈپریشر کے ساتھ موٹاپا ہو تو ذیابیطس کا خدشہ بڑھ جاتا ہے لہٰذا شوگر چیک کروا کر اس کا شک دور کر لینا چاہئے۔

شوگر کے مریض کو غنودگی‘ سر درد‘ چکر‘ بے چینی‘ گھبراہٹ‘ ٹھنڈے پسینے آئیں یا دل کی دھڑکن بڑھ جائے یا پھر جسم کانپنے لگے اور بہت زیادہ کمزوری ہو جائے، اس طرح نظر میں دھندلاپن ہو تو یہ خون میں شوگر کی کمی کی علامات ہیں۔ اس کو اگر بروقت کنٹرول نہ کیا جائے اور خون میں شوگر چالیس ملی گرام سے کم ہو جائے تو بے ہوشی بھی ہو سکتی ہے۔ اس کیلئے فوراً 2‘ 3 چمچ چینی پانی میں ملا کر مریض کو پلائیں۔ ایسے مریض جن کی شوگر بار بار بہت زیادہ یا پھر کم ہو رہی ہو ان کو روزہ نہیں رکھنا چاہئے بلکہ اپنے ڈاکٹر سے رجوع کریں تو بہتر ہو گا۔

شوگر کے مریض وزن کو نہ بڑھنے دیں بلکہ معتدل رکھیں۔ورزش اور سیر نہایت مفید ہے۔ روزانہ ایک سے دو میل پیدل چلنا بہت ضروری ہے۔فکر اور پریشانی سے بچیں کیونکہ ان سے شوگر کا کنٹرول بگڑ جاتا ہے۔موروثی وراثت میں شوگر کا مرض ہو تو پرہیز زیادہ ضروری ہے۔ دانتوں مسوھوڑں‘ پاؤں کی انگلیوں‘ ناخنوں اور زخموں میں صفائی کا خاص خیال رکھیں۔

شوگر کی گولیاں ایک مدت تک کام کرتی ہیں اس کے بعد انسولین کی ضرورت ہوتی ہے۔ انسولین لگوانے سے ڈرنا نہیں چاہئے۔

پرہیز والی خوراک میں مٹھائی ہر قسم کی‘ حلوہ کھیر‘ گڑ‘ شربت‘ شکوائش‘ میٹھا دودھ‘ لسی‘ ملک شیک‘ جوس‘ کسٹرڈ‘ پڈنگ‘ کیک‘ پیسٹری‘ بسکٹ‘ گلوکوز‘ سوفٹ ڈرنک (بوتلیں)‘ جیلی‘‘ بلائی کریم‘ گاجر کا حلوہ‘ چاکلیٹ‘ بند ڈیوں کے پھل و مربے نوڈلز اور سپیگٹی شامل ہیں۔

آلو‘ شلغم‘ چقندر‘ اروی‘ گاجر‘ مٹر‘ ماش کی دال‘ چاول‘ سویاں‘ دلیہ‘ گندم‘ مکئی‘ جوار‘ باجوہ‘ ڈبل روٹی‘ آلو بخارا‘ انار‘ لوکاٹ‘ چکوترہ اور خربوزہ (½ کھائیں)، شریفہ‘ چیکو‘ پپیتا‘ پنیر‘ مارجرین و مکھن اور سبزیوں کا تیل کی کم اور اعتدال میں تھوڑی مقدار لی جاسکتی ہے۔

جامن‘ بھنے چنے کالے کی دال‘ بیسن‘ پکوڑے(کم تیل میں یا بیک کرلیں)‘ سبز پتوں والی سبزیاں مثلاً سلاد‘ ساگ‘ پالک‘ کریلے‘ میتھی‘ بند گوبھی‘ ٹینڈے‘ کدو‘ توریاں‘ بھنڈی‘ پھلیاں‘ لوبیہ‘ دال مسور‘ چاروں مکس دالیں‘ کھیرا‘ ککڑی‘ فالسہ‘ لیموں بغیر چینی‘ دودھ‘ دہی اور لسی‘ چائے‘ مرغ‘ مچھلی (بغیر تلے ہوئے) بکرے کا گوشت بغیر چربی‘ پیاز‘ ہری مرچ‘ سفید و لال مولی اور بینگن‘ تازہ کریلے اور جامن کا جوس مفید ہے۔
پھل کھا سکتے ہیں لیکن اعتدال میں ۔
روزانہ کسی ایک بڑے یا دو چھوٹے پھلوں کا انتخاب کر سکتے ہیں۔ سیب‘ انار‘ آڑو‘ کنو‘ مالٹا‘ ناشپاتی‘ خوبانی‘ کیلا‘ خربوزہ ½ کھائیں۔ 2 امرود اور 2 آلو بخارے‘ انگور 8 دانے‘ چھوٹا آم و تربوز ہفتہ میں ایک لے سکتے ہیں۔ بشرطیکہ شوگر کنٹرول ہو۔
رمضان میں صحت مند رہیں تاکہ عبادات میں دل لگے اور آپ اس ماہ کا لطف اٹھا سکیں۔رمضان میں تکلیف نہیں اٹھانی بلکہ اس کو انجوائے کرنا ہے انشاء اللہ۔

Home Our Fight Against Diabetes The Diabetes Centre, Inc. (TDC), has taken up the challenge of dealing with the dramatic rise of diabetes prevalence in Pakistan. Our strategy focuses on providing comprehensive preventive, promotive, curative and rehabilitative services for diabetes patients. TDC aims at....

17/02/2021

کیا ایک دفعہ انسولین لگانے کے بعد ہمیشہ لگانی پڑیگی؟
کیا انسولین سے جسم کو نقصان پہنچتا ہے؟
کیا انسولین گردوں پر اثر کرتی ہے؟
انسولین شائد طب کی دنیا کی اُن چند دواؤں میں سے ایک ہے جسے بے شمار فوائد کے باوجود نقصان دہ سمجھا جاتا ہے اور ضرورت ہونے کے باوجود کبھی مریض کے شک و شبہات اور کبھی اُن رشتہ داروں کے کہنے پر نہیں لی جاتی جو کہ خود خاطر خواہ آگاہی نہیں رکھتے اور سنی سنائی باتوں پر باتیں گڑھ دیتے ہیں۔
آج ان سوالوں کے جواب دینے کی کوشش کرتے ہیں۔
۱- انسولین کا استعمال اُس صورت کیا جاتا ہے جب دوائیوں پر شوگر صحیح کنٹرول نہیں ہورہی ہوتی۔ ایسے میں انسولین ہی شوگر کو کنٹرول کر کے جسم کو دوسری بیماریوں سے بچاتی ہے جیسے دل کا دورہ، گردے کا خراب ہو کر ڈائیلیسس (Dialysis) پر آجانا اور آنکھوں اور نَسوں کی بیماریاں۔
۲- ہر دوا کے کچھ معمولی side effects ہوتے ہیں ویسے ہی انسولین کے بھی ہیں، جیسے تھوڑا بہت وزن بڑھنا لیکن خود سے انسولین نا تو گردے خراب کرتی ہے نا ہی کوئی نشہ آور چیز کی طرح عادت لگاتی ہے
۳- تو یہ انسولین ایک طرح سے جان بچاتی ہےاوراِس طرح شوگر جیسی خاموش بیماری کو زیادہ اچھا کنٹرول کرتی ہے copied#

28/01/2021

Case of covid pneumonia with ARDS, on supplemental oxygen, treated with great care and expertise, Alhamdulillah won battle against Covid,
Praise to Almighty Allah

28/01/2021

Patient of subfertility, treated well and satisfied with the treatment and Allah has blessed him with olad e nareena
🤲🤲

23/01/2021
24/12/2020
24/12/2020

Point to ponder

23/12/2020
16/12/2020

Stay active stay healthy

24/11/2020

‏کورونا تدارک کے لئے کامیاب ویکسین کی بھر مار پاکستان کے لئے سب سے حوصلہ افزا خبر AstraZeneca Oxford University ویکسین ہے تقریباً 400 رپے فی dose ہو گی نقل و حمل اسٹور کرنے میں کوئی قباحت نہیں اگلے مہینے دستیاب ہوگی manufacturing اتنی آسان کے سال بھر میں 2 ارب ویکسین تیار ہوں گی...

23/11/2020
17/11/2020

یابیطس کی روک تھام کرنے والی 9 غذائی عادات

ٹھیک ہے کہ ذیابیطس ایسا مرض ہے جو ایک بار لاحق ہوجائے تو پیچھا نہیں چھوڑتا اور اس کے نتیجے میں دیگر طبی مسائل کا سامنا ہوتا ہے۔
تاہم ذیابیطس سے بچاﺅ یا لاحق ہونے پر اسے پھیلنے سے روکنا زیادہ مشکل نہیں اور طبی سائنس نے اس کے حوالے سے چند غذائی عادات پر زور دیا ہے۔

گھر کے بنے کھانوں کو ترجیح دینا
ہاورڈ اسکول آف پبلک ہیلتھ کی ایک حالیہ تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ جو لوگ روزانہ گھر کے بنے کھانوں کو ترجیح دیتے ہیں (ہفتے میں کم از کم 11 بار) ان میں ذیابیطس کے مرض میں مبتلا ہونے کا خطرہ 13 فیصد کم ہوتا ہے۔ گھر میں بنے کھانے جسمانی وزن کو کنٹرول میں رکھتے ہیں جو ذیابیطس کا خطرہ کم کرنے میں اہم کردار ادا کرنے والا عنصر ہے۔



اجناس کا زیادہ استعمال
جو لوگ دلیہ، جو اور دیگر اجناس کا زیادہ استعمال کرتے ہیں ان میں ذیابیطس کا خطرہ 25 فیصد تک کم ہوتا ہے۔ یہ دعویٰ طبی جریدے جرنل ڈائیبٹولوجی میں شائع ایک تحقیق میں کیا گیا تھا۔

اخروٹ کا روزانہ استعمال
امریکا کی یالے یونیورسٹی کی ایک تحقیق کے مطابق اگر کسی شخص میں ذیابیطس کی تشکیل کا خطرہ ہو تو وہ تین ماہ تک روزانہ کچھ مقدار میں اخروٹ کا استعمال کرے تو اس کی خون کی شریانوں کے افعال میں بہتری اور نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح کم ہوتی ہے، اور یہ دونوں ذیابیطس ٹائپ ٹو کا باعث بننے والے عناصر ہیں۔ سب سے اہم بات یہ ہے کہ اخروٹ کے استعمال سے جسمانی وزن میں اضافے کا خطرہ نہیں ہوتا اور انہیں کسی بھی وقت کھایا جاسکتا ہے۔



غذا میں ٹماٹر، آلو اور کیلوں کی شمولیت
ان تینوں میں کیا چیز مشترک ہے؟ یہ سب پوٹاشیم سے بھرپور ہوتے ہیں اور ایک حالیہ تحقیق کے مطابق یہ منرل ذیابیطس کے شکار افراد کے دل اور گردوں کی صحت کو تحفظ فراہم کرتا ہے۔ پوٹاشیم سے بھرپور غذا کھانے سے گردے کے افعال میں خرابی آنا سست ہوجاتا ہے جبکہ خون کی شریانوں میں پیچیدگیوں کا خطرہ بھی کم ہوتا ہے۔تاہم ذیابیطس کے مریض ان اجزا کا استعمال محتاط مقدار میں کریں لیکن ان کا بالکل نظر انداز کرنا بھی درست نہیں۔

غذائی تجربات سے گریز
امریکا کی ٹفٹس یونیورسٹی اور ٹیکساس یونیورسٹی کی ایک حالیہ تحقیق میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ جو لوگ کھانوں میں بہت زیادہ تنوع پسند کرتے ہیں ان میں میٹابولک صحت خراب ہوتی ہے اور موٹاپے کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔ اس کے مقابلے میں جو لوگ مخصوص غذاﺅں تک ہی محدود رہتے ہیں وہ عام طور پر صحت بخش کھانوں کا انتخاب کرتے ہیں اور اس طرح ان میں ذیابیطس کا خطرہ کم ہوتا ہے۔

دہی کا استعمال
روزانہ دہی کا استعمال ذیابیطس ٹائپ ٹو کا خطرہ اٹھارہ فیصد تک کم کردیتا ہے اور یہ بات ہاورڈ یونیورسٹی کی ایک تھقیق میں سامنے آئی۔ محققین کے مطابق دہی میں ایسے بیکٹریا ہوتے ہیں جو انسولین کی حساسیت بہتر کرنے میں مدد دیتے ہیں، تاہم اس حوالے سے محققین نے مزید تحقیق کی ضرورت پر بھی زور دیا ہے، تاہم پھر بھی ان کا کہنا ہے کہ دہی کے استعمال سے نقصان کوئی نہیں ہوتا۔

ہر وقت منہ چلانے سے گریز
ذیابیطس کے شکار افراد کو اکثر کہا جاتا ہے کہ وہ دن بھر میں 6 بار کم مقدار میں کھانا کھائیں مگر زیادہ مقدار میں کم تعداد میں غذا زیادہ بہتر ثابت ہوتی ہے۔ چیک ریپبلک کی ایک تحقیق کے مطابق کم مقدا رمیں زیادہ بار غذا کا استعمال کچھ اتنا فائدہ مند نہیں، اس کے برعکس تین بار میں پیٹ بھر کر کھالینا بلڈشوگر میں کمی لاتا ہے اور جسمانی وزن بھی متاثر نہیں ہوتا اور ہاں بھوک بھی محسوس نہیں ہوتی۔



پھلوں کا بہتر انتخاب
جو لوگ جوسز کی بجائے پھل خاص طور پر بلیو بیریز، سیب اور ایوکیڈو کھانے کو ترجیح دیتے ہیں وہ بھی ہفتے میں کم از کم دو بار تو ان میں ذیابیطس ٹائپ ٹو کا خطرہ 23 فیصد تک کم ہوجاتا ہے۔ طبی جریدے بی ایم جے میں شائع تحقیق کے مطابق پھلوں کے جوس جتنے بھی صحت بخش قرار دیئے جائیں مگر وہ میٹابولزم امراض بالخصوص ذیابیطس کا خطرہ 21 فیصد تک بڑھا دیتے ہیں۔



کولڈ ڈرنکس سے پاک فریج
کولڈ ڈرنکس یا میٹھے مشروبات کا روزانہ استعمال ذیابیطس کا مریض بننے کا خطرہ 26 فیصد تک بڑھا دیتا ہے۔ ہاورڈ یونیورسٹی کی ایک تحقیق کے مطابق میٹھے مشروبات کا استعمال محدود کرنا جسمانی وزن کو کنٹرول کرنے سمیت دل اور ذیابیطس جیسے امراض کی روک تھام میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔
نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں
For appointment and consultation visit our page

14/11/2020

World diabetes day
Many efforts have been made to prevent and treat diabetes. Yet the number of people with diabetes is going up. What’s more, it is rising most rapidly in low- and middle-income countries, the countries least well-equipped with the diagnostics, medicines, and knowledge to provide life-saving treatment

The COVID-19 pandemic has brought additional pain. Many people who require regular care and treatment for their diabetes have struggled to access that care. And people with diabetes are at increased risk of severe disease and death from COVID-19
Let us work together to make sure that, through this ambitious and much-needed collaboration,
Regards & Prayers
Dr Muhammad Farhan Khan

06/11/2020

Alhamdulilah 🤲
Member American Diabetes Association

29/10/2020
27/10/2020

Share to aware

Photos from Dr Muhammad Farhan Khan's post 24/10/2020

Up gradation to next level Alhamdulilah

12/10/2020

🔹 On this “World Arthritis Day” , Let's spread awareness that Arthritis is treatable.

Early Diagnosis and Treatment of Arthritis can make a huge difference and better outcome.
World Arthritis Day2020

07/10/2020

Keep walking
Share to aware

04/10/2020

فالج Brain Stroke:
فالج کے بارے میں عام خیال یہ ہے کہ یہ گرم سرد ہونے یا صبح کی "پاگل ہوا" لگنے سے ہوجاتا ہے۔ مگر حقیقت میں ان دونوں کی فالج کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہے۔
فالج کی دو قسمیں ہیں۔
1۔ Hemorrhagic Stroke
2- Ischaemic Stroke

1۔ ہیموریجک سٹروک: دماغ میں خون کا رگ پٹھنے rupture of blood vessel کی وجہ سے ہوتا ہے۔ 20% فالج کے کیسز اس ٹائپ کے ہوتے ہیں۔ جسکا بڑا سبب ہائی بلڈ پریشر ہوتا ہے۔
2۔ اسکیمک سٹروک: دماغ کا خون کی رگ بند ہونے blockage of blood vessel کی وجہ سے ہوتا ہے۔ 80% فالج کے کیسز اس ٹائپ کے ہوتے ہیں۔ جسکا بڑا سبب دل کی بیماریاں اور ہوتی ہے۔
اکثر فالج کا اٹیک صبح کی وقت ہوتا ہے کیونکہ رات کے آخری حصے میں گردے ایک مادہ خارج کرتی ہیں جسے Adrenaline کہا جاتا ہے، جو خون کی شریانوں کو تنگ کرکے بلڈ پریشر ہائی کرتا ہے۔ جسکی وجہ سے خون کی شریان پھٹ جاتا ہے۔
فالج کے اسباب:
1۔ ہائی بلڈ پریشر
2۔ تمباکو کا استعمال(سگریٹ یا نسوار وغیرہ)
3۔ دل کی بیماریاں
4۔ ہائی بلڈ شوگر
5۔ مرغن غذائیں، وزن کا بڑھنا اور ورزش نہ کرنا۔

روک تھام Prevention:
۔40 سال کے عمر کے بعد نمک اور چینی کا استعمال کم یا بند کرنا دیسی گھی،
۔بڑا گوشت کھانا بند کرنا، خصوصا رات کے وقت نمک، گھی اور بڑا گوشت بلکل نہیں کھانا،
۔ روزانہ 4۔6 کلومیٹر پیدل چلنا،
۔جو لوگ میڈیسن استعمال کرتے ہیں میڈیسن میں ناغہ نہیں کرنا۔

Photos from Dr Muhammad Farhan Khan's post 04/10/2020

One of the key stone to control your diabetes is through management of your diet and to have a look on your calories
For further tips
Follow my page and visit my clinic
For appointment
Call or watsapp
0332 5494578

02/10/2020

October "Breast Cancer Awareness Month".

At some stage of life, 1 in 9 Pakistani women has become the patient of breast cancer. In Asia, Pakistan has the highest rate of breast cancer. It is the second leading cause of death among women. An estimated 83,000 cases are being annually reported in our country, and over 40,000 deaths are caused by it, which is alarming.

Get awareness to aware others..
Every Makes a Difference🌸

27/09/2020

پری ذیابیطس
ذیابیطس ہو جانے سے پہلے مریضوں کو پری ذیابیطس ہوتی ہے۔ پری ذیابیطس میں خون میں شوگر کی مقدار بڑھنے لگتی ہے مگر ابھی اتنی زیادہ نہیں ہوئی کہ ذیابیطس تشخیص کی جائے۔ اگر سوچا جائے تو یہ ایک اچھا موقع ہے جس میں احتیاط شروع کر دیا جائے تو ذیابیطس سے بچا جا سکتا ہے۔ تمام دنیا میں پری ذیابیطس تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ انڈیا، پاکستان اور چین میں ان مریضوں کی تعداد لاکھوں میں ہے۔ ذیابیطس ایک سنجیدہ بیماری ہے اور اس کے منفی اثرات پری ذیابیطس سے شروع ہو جاتے ہیں۔ اس سطح پر چونکہ کوئی علامات ظاہر نہیں ہوتیں اس لیے لوگوں کو پتہ نہیں چلتا کہ انہیں پری ذیابیطس ہے۔

پری ذیابیطس کیسے تشخیص کرتے ہیں؟
بلکل اسی طرح جیسے ذیابیطس تشخیص کی جاتی ہے پری ذیابیطس کو بھی خون کے ٹیسٹ سے تشخیص کیا جاتا ہے۔ ان ٹیسٹوں میں اے-ون-سی، خالی پیٹ خون میں شوگر کا ٹیسٹ اور گلوکوز کو برداشت کرنے والا ٹیسٹ شامل ہیں۔اس ٹیسٹ کو ایچ اے ون سی Ha1bc کہتے ہیں
اے-ون-سی
5.7٪ سے کم –نارمل
5.7 سے 6.4 تک۔ پری ذیابیطس
6.5 سے زیادہ– ذیابیطس
آٹھ گھنٹے خالی پیٹ ہونے کے بعد خون میں شوگر کا ٹیسٹ
100ملی گرام فی ڈیسی لیٹر سے کم- نارمل
100ملی گرام سے 126ملی گرام – پری ذیابیطس
126ملی گرام فی ڈیسی لیٹر سے زیادہ دو مختلف موقعوں پر – ذیابیطس
دو گھنٹے والا منہ کے زریعے گلوکوز برداشت کرنے والا ٹیسٹ
140ملی گرام فی ڈیسی لیٹر سے کم- نارمل
140 سے 200ملی گرام فی ڈیسی لیٹر – پری ذیابیطس
200 ملی گرام فی ڈیسی لیٹر سے زیادہ- ذیابیطس
پری ذیابیطس کا علاج
۔ کھانے پینے میں احتیاط ، باقاعدگی سے ورزش اور دوائیوں کے استعمال سے یہ بیماری درست ہو سکتی ہے۔ پانچ سے دس فیصد وزن میں کمی کرنے سے آپ اس بیماری کو بہتر کر سکتے ہیں۔
کن لوگوں کو پری ذیابیطس کا ٹیسٹ کروانا چاہئے؟
ایسے تمام مریض جن کو ذیابیطس ہو جانے کا خطرہ لاحق ہو ان کو پری ذیابیطس کا ٹیسٹ کروانا چاہیے۔ ان میں وہ لوگ شامل ہیں جن کی عمر پینتالیس سے زیادہ ہو، ان کے خاندان میں اور لوگوں کو ذیابیطس ہو، ایسی خواتین جن کو حمل کے دوران ذیابیطس ہو گئی ہو، ایسے مریض جن کو ہائ بلڈ پریشر یا کولیسٹرول کے زیادہ ہونے کی شکایت ہو اور وہ جن کو دل کی بیماری ہو۔
آخر میں ہم یہی کہیں گے کہ پری ذیابیطس کا نام سن کر آپ ہمت نہ ہاریں۔ یہ ایک نہایت قیمتی موقع ہے جس کے علاج اور احتیاط سے آپ ذیابیطس سے بچ سکتے ہیں۔ یاد رہے کہ ذیابیطس کی بیماری کو کچھ سال ہو جائیں تو اس کو مینیج تو کر سکتے ہیں لیکن اس سے چھٹکارا نہیں پایا جا سکتا۔ لاکھوں افراد کو پری ذیابیطس کا مرض لاحق ہے اور وہ اس سے لاعلم ہیں۔t

27/09/2020

Consult for expert opinion
Call for appointment
0332 5494578

Location

Telephone

Website

Address


Islamabad Diagnostic Center And Specialist Clinic Mall Road Saddar Opposite AFIC
Rawalpindi
45000

Opening Hours

Monday 14:00 - 22:00
Tuesday 14:00 - 22:00
Wednesday 14:00 - 22:00
Thursday 14:00 - 22:00
Friday 14:00 - 22:00
Saturday 14:00 - 22:00

Other Family Doctors in Rawalpindi (show all)
Matab Hakeem Rehan Salik Matab Hakeem Rehan Salik
Hakeem Rehan Salik 531 B Block Near Madni Masjid Satellite Town
Rawalpindi, 46300

Hebal physician

Homeopathic Treatment For Critical Diseases. Homeopathic Treatment For Critical Diseases.
Al-Syed Homeopathic Clinic JT Road Treat Murree
Rawalpindi, 12345

Homeopathic Medicines.

DR.Kainat DR.Kainat
Scheme 3
Rawalpindi, 46200

family physician ap k har problem ka behtreen haal sirf dr kainat k pas

Naseem Homeopathic Family Center And Digital Research Center Naseem Homeopathic Family Center And Digital Research Center
Rawalpindi, 46000

Professor Dr.Asif Majeed Pal(Gold Medalist). BSC(Punjab),DHMS,NCH,IBP1,BSC Homeopathic,RHMP,Homeopat

Herbal & Spiritual Treatment by Dr. Kazmi-drmrskazmi Herbal & Spiritual Treatment by Dr. Kazmi-drmrskazmi
Rawalpindi

Dr. Mrs. Major Kazmi k FB Page se Herbal,Spiritual,Rieki,Mind Power,Gems & Lucky Stones se Elaj k Tareky Perh kr Gher Beth K Elaj Kren. Visit http://www.facebook.com/DrMrsKazmi https://www.Twitter.com/DrMrsKazmi http://www.Instagram.com/DrMrsKazmi

DrQamar Ahmed Shahzada DrQamar Ahmed Shahzada
Mohan Pora
Rawalpindi

Medical Director at Amin medical center New scheme Mohan pora rawalpindi Senior vice president and m

farooq clinic farooq clinic
Adamjee Road
Rawalpindi

Family Physcians serving since 1960. providing consultation, investigations and treatment to all kin

Health & Healing Health & Healing
Saidpur Road
Rawalpindi, 46000

Under the Supervision of Prof. Hakeem Sardar Khan since 1998. For further info: Contact at 033151908

Jehanzaib Clinic Jehanzaib Clinic
Rawalpindi

Dr Mushtaq Ahmed Malik (Homoeo Physcian) M.A (PU) DHMS(Rwp) D-AC DEMS(Lhr RHMP(PAK) Ex.Lecturer NHMC

Dental Chalet Dental Chalet
Shop # 5 Center Point Plaza , Spring North Commercial Near Shaheen Chowk , Phase
Rawalpindi, 46000

Canadian Diabetes Clinic Canadian Diabetes Clinic
Chaklala Scheme 3
Rawalpindi

At CDC our mission is to provide superior treatment and compassionate care. We are providing the highest level of care in a peaceful and healing environment. We ensure each patient receives the highest level of care possible.

Bestlife Pakistan Bestlife Pakistan
Office 101. First Floor. Plaza 111, Eastern Boulevard Civic Center Phase 4
Rawalpindi

SERVICE PROVIDER COMPANY