Paigham-e-Quran Academy پیغامِ قرآن اکیڈمی

Paigham-e-Quran Academy پیغامِ قرآن اکیڈمی

Comments

قرآن کی تلاوت کے ساتھ ترجمہ پڑھنے سے دل منور ہوتا ہے
چلو علامہ شہید کے شہر چلو ختم نبوت کی حاطر امیر محترم کے بازوں بن کے چلو
السلام علیکم و رحمۃ اللہ وبرکاتہ آج سے تفسیر القران کلاس 12 بجے ہوا کریں گی براہ کرم 15 منٹ روزانہ قران کیلیے ضرور نکالیں
Allamdullah kami bertemu teman sejatiku
سورة النجم
watch our first lecture introduction....

The main aim of Paigham-e-Quran Foundation is to spread Knowledge.
ھمارا مقصد قران کو

Operating as usual

فہم قرآن کورس نومبر 2022 25/10/2022

فہم قرآن کورس نومبر 2022

https://chat.whatsapp.com/HAPiCJec5LBJlrGo65a5vP
اگر آپ قرآن مجید کو خود سے سمجھنے کا ارادہ رکھتے ہیں اور آپ روازنہ صرف 15 منٹ نکال سکتے ہیں صرف 15 دن ۔تو یہ کورس آپ کے لیے انتہائی مفید ثابت ہو گا ان شاءاللہ ۔یہ کورس بلکل فری ہے اور آپ کورس کرنے کے بعد حیرت انگیز طور پر قرآن مجید کو خود سے کافی حد تک سمجھ رہے ہوں گے ۔اور پھر آپ کو قرآن مجید کو ڈیٹیل سے سمجھنے کے سفر کے لیے بھی ہمارا کورس نور القرآن کے نام سے چل رہا ہے آپ اس میں بی شامل ہو سکتے ہیں بلکل فری ہو کورسز ہیں ۔ آئیں اس مبارک سفر کا آغاز کرتے ہیں ۔
پلیز اس لنک کے ذریعے گروپ میں شامل ہو جائیں آپ سے انتہائی مودبانہ گزارش ہے اگر آپ نے واقعی ہی کورس کرنا ہے تو پھر شامل ہو جائیں ۔براہ کرم صرف شوقیہ اس گروپ میں شامل نہ ہوں ۔اپ گروپ میں شامل نہ ہوں کوئی بات نہیں لیکن اگر شامل ہو کر گروپ کو لفٹ کر دیں گے تو آپ قرآن کو اگنور کر رہے ہیں اور یہ بہت بڑا گناہ ہے ۔اس لیے اگنور مت کریں۔جزاک اللہ خیرا

فہم قرآن کورس نومبر 2022 WhatsApp Group Invite

فہم قرآن کورس نومبر 2022 18/10/2022

فہم قرآن کورس نومبر 2022

https://chat.whatsapp.com/HAPiCJec5LBJlrGo65a5vP
اگر آپ قرآن مجید کو خود سے سمجھنے کا ارادہ رکھتے ہیں اور آپ روازنہ صرف 15 منٹ نکال سکتے ہیں صرف 15 دن ۔تو یہ کورس آپ کے لیے انتہائی مفید ثابت ہو گا ان شاءاللہ ۔یہ کورس بلکل فری ہے اور آپ کورس کرنے کے بعد حیرت انگیز طور پر قرآن مجید کو خود سے کافی حد تک سمجھ رہے ہوں گے ۔اور پھر آپ کو قرآن مجید کو ڈیٹیل سے سمجھنے کے سفر کے لیے بھی ہمارا کورس نور القرآن کے نام سے چل رہا ہے آپ اس میں بی شامل ہو سکتے ہیں بلکل فری ہو کورسز ہیں ۔ آئیں اس مبارک سفر کا آغاز کرتے ہیں ۔
پلیز اس لنک کے ذریعے گروپ میں شامل ہو جائیں آپ سے انتہائی مودبانہ گزارش ہے اگر آپ نے واقعی ہی کورس کرنا ہے تو پھر شامل ہو جائیں ۔براہ کرم صرف شوقیہ اس گروپ میں شامل نہ ہوں ۔اپ گروپ میں شامل نہ ہوں کوئی بات نہیں لیکن اگر شامل ہو کر گروپ کو لفٹ کر دیں گے تو آپ قرآن کو اگنور کر رہے ہیں اور یہ بہت بڑا گناہ ہے ۔اس لیے اگنور مت کریں۔جزاک اللہ خیرا

فہم قرآن کورس نومبر 2022 WhatsApp Group Invite

12/10/2022

اظہار الحق السلفی صاحب کی وال سے کاپی کی گئ تحریر ....ایک ایسی تحریر جو میرے دل کے تہہ خانوں میں اتر گئ...... آپ بھی پڑھیں
استاد الکبیر ابو سیف الجمیل

(اس تحریر کا مسودہ پانچ اکتوبر کو لکھا گیا جسے آج معمولی قطع و برید کے بعد پوسٹ کیا جا رہا ہے)

معروف عالمی دنوں پر بعض لوگوں نے یہ رائے اختیار کی ہے کہ کسی اچھے کام کے لیے کوئی دن مخصوص نہیں ہوتا. یوں سال کا ہر دن ہی فادرز ڈے, پیس ڈے, انوائرنمنٹ ڈے, لیبر ڈے اور ٹیچرز ڈے ہے. بظاہر یہ بات سادہ اور پر اثر ہے مگر جدید انسان کے لیے اس طرح کی تخصیص, اس کے بے حد مصروف دنوں اور مشاغل بھری راتوں کی وجہ سے شاید غیر مناسب نہیں ہے. جدید آدمی کے پاس ان روحانی بکھیڑوں میں پڑنے کا وقت نہیں ہے.
وہ "مہذب معاشرے" جو ان عالمی دنوں کی جائے پیدائش ہیں, وہاں کے ایک طالب علم کی زندگی, جسے ابھی فیملی اور روزگار کے عفریت نے چھوا تک نہیں, اتنی بے ہنگم اور محبوس ہے کہ وہ اپنے روحانی وجود کو دینے کے لیے وقت نہیں بچا پا رہا.
ٹھیک یہی کیفیت تیسری دنیا کے ممالک کے ہے جہاں عام آدمی کی اکثریت اگر مفید سرگرمیوں میں نہیں تو غیر ضروری مشاغل میں ضرور مصروف ہے. یہاں کا انسان زندگی کے اخلاقی معانی کو بتدریج وہاں چھوڑ کر آگے نکلنے کی کوشش کر رہا ہے جہاں تک پہنچنے میں اس نے صدیوں کا سفر اور بے پناہ مشقتیں جھیل رکھی ہیں.

خیر سے یہ باتیں ہمارے لیے عین الموضوع نہیں ہیں. ہم یوم اساتذہ پر بات کرتے ہیں. آج قریب سبھی نے "یوم اساتذہ" پر اپنے محسنوں کے لیے اچھے الفاظ کہے اور ہمیں لگا کہ ہمیں بھی ایسا کرنا چاہیے. دراصل ہم اس پہ بہت دنوں سے لکھنا چاہ رہے تھے مگر ہر بار اس پتھر کو بھاری جانا اور چوم کر رکھ دیا.
سچ تو یہ ہے کہ ان کی شخصیت آج بھی ہمارے لیے معمہ ہے. گو کہ شعوری ارتقاء کے ساتھ یہ گتھیاں یکے بعد دیگرے سلجھ رہی ہیں. مگر احساس یہ ہے کہ یہ سلسلہ عمر کے آخری حصے تک جاری رہے گا اور ممکن ہے کہ ایک اوسط عمر اس کام کے لیے ناکافی پڑ جائے.
مجھے افسوس ہے کہ میرے پاس ایسی کوئی چیز نہیں جس سے آپ کو یقین دلا سکوں کہ یہ سب مبالغہ نہیں بلکہ حقیقی احساس ہے.

چلیے ہم دوٹوک انداز میں شروع کرتے ہیں. ان کا نام "ابو سیف محمد جمیل" ہے. شاید نہیں. بلکہ "ابو سیف جمیل" ان کا درست نام ہے. اس بات اسے کوئی فرق نہیں پڑتا کہ آپ کو یہ سن کر کیسا محسوس ہو گا مگر سچی بات یہ کہ سیف صاحب ناموں کے ساتھ لفظ "محمد" لاحق کرنے کو غلو اور ہندوستانی لوگوں کی ایجاد کردہ بدعت سمجھتے تھے.
ہم وہابی اس معاملے میں پہلے ہی بہت بدنام تھے مگر پہلی مرتبہ جب یہ بات ہم نے سنی تو ہم بھی چونکے بنا نہ رہ سکے. بعد میں مگر بہت ساری ایسی چیزیں واقع ہوئی جس سے ہمیں پورے کینوس کی سمجھ آنا شروع ہوگئی.

یہاں یہ واضح کر دینا ضروری ہے کہ معھد سے کسی ایک شیخ اوثق کو پسند کرلینے سے ان کی کلاس کے باقی کبار اہل علم کو ڈی گریڈ کرنا لازم نہیں آتا.
یہ بالکل ایسے ہی ہے جیسے آپ دودھ اور شہد کا تقابل کرنے بیٹھ جائیں. جیسے گلاب کا جاسمین سے, چیتے کا مارخور سے, کے ٹو کا نانگا پربت سے اور لڑکوں بالوں کی زبان میں کوہلی کا ڈی ویلئیرز سے موازنہ نہیں بنتا. ان میں سے ہر ایک اپنے مدمقابل کے ساتھ عمودی کی بجائے افقی ترتیب کے ساتھ جڑا ہوا ہے. بالکل باغ کے پھولوں کی طرح جو محض رنگت اور خوشبو میں مختلف ہیں.

ہم واپس آتے ہیں. سو سیف صاحب آدمیوں کی اس قسم سے ہیں جو اپنے اندر تابکار اثرات رکھتے ہیں. آپ نے مسجد میں ان کے آس پاس کہیں نماز پڑھی. کلام کیا نہ آنکھیں چار ہوئیں. چند ساعتوں کی اس قربت کا اثر مگر یہ ہوا کہ خیال جو اعمال کا محرک ہے, شیخ کے تابکار وجود کے ہاتھوں جکڑ گیا.
اس قربت نے تزکیہ و تطھیر کا وہ عمل سر انجام دے دیا جس کے لیے لوگ سینکڑوں صفحات لکھتے اور گھنٹوں کی مجالس منعقد کرتے ہیں.

لوگوں کو ہمیشہ گلہ رہا کہ سیف صاحب خطبہ جمعہ کیوں نہیں دیتے. معلوم نہیں سیف صاحب خود اس سوال کا جواب کیا دیتے ہوں گے. کم از کم یہ تو نہیں کہا جا سکتا کہ وہ اپنا علم خود تک محدود رکھنا چاہتے ہیں. بعض نے کہا وہ Introvert ہیں اور فن اظہار سے عاری ہیں. شاید ہوں گے لیکن اس کی بھی تو کوئی وجہ ہو گی. آپ اسے عطیہ خداوندی کہ کر تو جان نہیں چھڑا سکتے. تو پھر کیوں سیف صاحب کوئی کتاب لکھ پائے نہ درس قرآن و حدیث کے اسٹیج پر چڑھ سکے.
ہمارا احساس یہ ہے کہ شیخنا ثقاہت کے اس مقام پر پہنچ چکے تھے جہاں صاحب علم اپنی صحبت علم کا اعتراف کرنا چھوڑ دیتا ہے. وہ مقام جو خانہ بدوش صوفیوں کے لیے معروف ہے جہاں وہ اپنی ذات کی نفی کر دیتے ہیں. جہاں واعظِ زاھد لوگوں کے حتمی جان لینے کے ڈر سے رائے دینا ترک کر دیتا ہے. جہاں اپنی کوتاہ علمی کو ہمیشہ وہ نظر کے سامنے رکھتا ہے. بلاشبہ یہ ان اوصاف میں سے ہے جس کی ہمارے زمانے کے اہل علم کو سب سے زیادہ ضرورت ہے.

سیف صاحب کا تخصص علم الرجال ہے. ہم نے ایک سے زائد لوگوں سے سنا ہے کہ شیخ زبیر علی زئی رحمہ اللہ کے بعد سیف صاحب اس فن کے امام ہیں. شاید یہ بڑی بات ہو مگر بڑی بات کوئی میرے یا آپ کے بارے کیوں نہیں کہتا. جن لوگوں نے ان کے روز مرہ کے مشاغل اور کتابوں سے گھرا کمرہ دیکھا ہے ان کے لیے اس بات کی تصدیق کرنا مشکل نہیں ہے. یہ جملہ تو زبان زد عام ہے کہ "اس حدیث کو سیف صاحب نے بھی صحیح قرار دیا ہے".
اور کتنا ہیبت ناک تھا وہ منظر جب رات میں ہم کسی سستے کتب خانے کی چھاپی ہوئی تاریخی لوفر کہانیاں پڑھتے اور صبح اٹھ کر پتہ چلتا کہ سیف صاحب نے انھیں موضوع قرار دیا ہے. ہیبت ناک اس لیے کہ ان میں حضرت عمر کا خط بنام دریا نیل اور نورالدین زنگی کا مشہور زمانہ خواب بھی شامل تھا. سنا ہے کہ وہ کمزور اسناد کی یا من گھڑت روایت بیان کرنے والے کو موقع واردات پر ٹوک دیا کرتے تھے.

سیف صاحب Perfectionist تھے. یعنی کسی بھی معاملے میں معیار پر سمجھوتہ نہ کرنے والے. ہم ہنسا کرتے تھے کہ سیف صاحب امتحان میں حروف کے کنگروں (دندانوں) کی غلطیاں بھی نشان زد کرتے ہیں.
کچھ لڑکوں نے ارادہ کیا کہ شام کے اوقات میں سیف صاحب سے سنن ابن ماجہ پڑھا کریں گے. اور سنن ابن ماجہ نصاب میں شامل نہیں تھی. اسے سیف صاحب کی بلند قامتی بھی کہیے اور عرفان جاوید صاحب کی کمالِ انکساری بھی کہ عرفان صاحب ہم چنے منے لڑکوں کے ساتھ شاگرد بن کر ابن ماجہ پڑھنے آیا کرتے تھے. سبق کے آخر میں سیف صاحب سب کا حاشیہ چیک کرتے اور شاید ہی کوئی ایسا شخص ہو جو ان کی محبت بھری تعلیق سے محفوظ رہا ہو.

لوگوں کے درمیان بڑھتے اختلاف اور اس کے نتیجے میں پیدا ہونے والے فساد کو دیکھتے ہوئے اہل الرائے نے مختلف حدود و قیود کا تعین کر دیا ہے جن میں سے ایک یہ ہے کہ کسی کی ذات پر براہ راست جرح نہ کی جائے. اپنی بیشتر خوبیوں کے ساتھ اس میں خامی مگر یہ ہے کہ اس میں جہالت کو بہت زیادہ رعایت دے دی گئی ہے اور ملمع سازوں کو کھلی چھوٹ مل گئی ہے. اس پابندی سے مفسدین کو مصلحین پر غلبہ دے دیا گیا ہے. چنانچہ ہمارے لیے یہ ماننا مشکل تھا کہ سیف صاحب عین اشخاص پر براہ راست رائے دیتے ہیں.
ایک بین الاقوامی شہرت کے حامل اسلامی کتب خانے کے مالک سے متعلق سیف صاحب نے کچھ کہا جس کا لب لباب یہ تھا کہ ایک بزنس مین کو ذاتی چھاپہ خانہ حاصل ہو جانے سے ہر گز یہ جواز نہیں ملتا کہ وہ خالص علمی موضوعات پر کتابیں لکھنا شروع کر دے. ہمیں یہ بات ہضم نہ ہوئی کیونکہ ہم ان کی کتابوں کے معیاری کاغذ, جان دار سرورق اور سڈنی و ہیوسٹن میں واقع کتب خانوں سے مرعوب تھے. آج مگر یہ باتیں یاد کر کے ہمیں اپنی سادہ لوحی پہ ترس آتا ہے.
خود ہماری جماعت کے ایک شعلہ بیاں مقرر جو فن خطابت کی آڑ میں بے سر و پا باتیں کرنے میں ماہر ہیں, سیف صاحب کی بے رحم جرح سے نہ بچ سکے. یہاں پر ہمارے لیے اپنے محترم شیخ سے اتفاق مشکل ہو گیا کیونکہ موصوف نہ صرف ایک مشہور عالم و مقرر بلکہ ایک ہفت روزہ اخبار کے چیف ایڈیٹر, ایک عدد ماہنامے کے مدیر اورایک قومی سطح کے اخبار کے کالم نگار تھے. تاہم یہ عقدہ بھی ہم پر چند روز پہلے کھل ہی گیا جب موصوف کی ایک ویڈیو منظر عام پر آئی جس میں انھوں نے مسلح افواج کے سربراہ کی خلوت والی عبادات کی وہ فہرست بتائی جسے جان کر چیف کے فرشتے بھی حیران رہ گئے. اور یہ بھی کہ چیف نے کبھی انڈیا کا گانا تک نہیں سنا.

کبھی کبھار ہمیں خیال آتا ہے کہ سیف صاحب غلط صدی میں غلط مقام پر پیدا ہو گئے ہیں. انھیں قرون اولی میں کہیں ہونا چاہیے تھا. بصرہ کے کسی انجان گھرانے میں. جہاں دن کو وہ بوجھ اٹھاتے اور راتوں میں چراغ تلے تحصیل علم کرتے. اعمش سے ان کی بیٹھک ہوتی. خطیب بغدادی کے ساتھ چہل قدمی کو جاتے. پتہ چلتا کہ خلیفہ مامون نے رقم بھیجی ہے سو بے نیازی سے واپس بھجوا دیتے. اور وہ کلمات کہتے جنھیں آج کل کے کی بورڈ واعظ اپنی ٹائم لائن پر سجاتے. خلیل کے ساتھ ان کی خط و کتابت ہوتی. اور راہویہ کے ساتھ شکار کو جاتے. سفیان بن عیینہ سے سر بازار ملتے تو وہیں روک لیتے. اور پیار سے سمجھاتے کہ صراحت سماع کی کس قدر اہمیت ہے.
یہ سب ہوتا اور عین اسی طرح ہوتا. اور ایسا ہی ہونا چاہیے تھا. لیکن چونکہ قدرت نے اپنی تقسیم کے راز کسی پر عیاں نہیں کیے. سو ہم عامیوں کا اس بابت رائے دینا بالکل بھی مناسب نہیں ہے.

اور دل چاہتا ہے کسی طرح امنگوں سے جان چھوٹ جائے اور ذمہ داریوں کا بوجھ ہمیشہ کے لیے خود بخود اتر جائے. پھر ہم ساری دنیا کو خیر باد کہ کر شیخ کے پڑوس میں پناہ لے لیں. ان کی کتابوں سے دھول جھاڑیں. ان کے پرنٹر میں سیاہی بھریں. ان کے مہمانوں کو وصول کریں اور ان کی سبزیوں کو پانی دیں. پھر جب دیکھیں کہ اب یہ بحث کے موڈ میں ہیں تو بنو امیہ و اہل بیت کا قضیہ لے کر بیٹھ جائیں. ان سے پوچھیں کہ اسلامی ریاست کا فلسفہ کی سرپرستی کا فیصلہ امت کے لیے کیسا ثابت ہوا؟ ابن رشد نے فقہ و فلسفہ میں بیک وقت مہارت کیسے لے لی. غزالی کیوں دونوں اطراف سے مطعون ٹھہرے. یہ بھی کہ ابن العربی آخر کہنا کیا چاہتے ہیں. اور شیخ الاسلام ان کی نظر میں متشدد تھے یا ویسے ہی لوگوں کو سچی بات ہمیشہ چبھتی ہے. اور یہ بھی کہ جدیدیت کا ڈھول اندر سے کتنا خالی ہے؟ اور الحاد کا علاج جدید ذہنوں کے لیے قدیم نسخوں سے کس طرح ممکن ہے. اور سب سے بڑھ کر یہ کہ منکرین حدیث کی تلبیسات کس طرح کور کی جا سکتی ہیں.
ہم یہ سب پوچھتے. اور ضرور پوچھیں گے. اور ہم اللہ سے دعا کرتے ہیں کہ وہ ہمیں زندگی میں ایک مرتبہ یہ موقع دے. ہم شیخ کی درازی عمر اور جسمانی صحت کے لیے دعا گو ہیں. واللہ الموفق

تحریر: ابو مبارز الاسدی

11/10/2022

السلام علیکم ورحمت اللہ وبرکاتہ آپ سب سے گزارش ہے اس آیت کا ترجمہ اور تفسیر ضرور پڑھیں پھر غور و فکر کریں کہ کیا ایسا ہی نہیں ہے ؟ اللہ تعالیٰ مجھے اور تمام انسانیت کو توحید کی سمجھ عطاء فرمائے آمین ثم آمین یا رب العالمین

تفسیر القرآن الکریم

مفسر: مولانا عبد السلام بھٹوی

سورۃ نمبر 39 الزمر
آیت نمبر 45

أَعُوذُ بِاللّٰهِ مِنَ الشَّيْطَانِ الرَّجِيمِ
بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

وَاِذَا ذُكِرَ اللّٰهُ وَحۡدَهُ اشۡمَاَزَّتۡ قُلُوۡبُ الَّذِيۡنَ لَا يُؤۡمِنُوۡنَ بِالۡاٰخِرَةِ‌ ۚ وَاِذَا ذُكِرَ الَّذِيۡنَ مِنۡ دُوۡنِهٖۤ اِذَا هُمۡ يَسۡتَبۡشِرُوۡنَ ۞

ترجمہ:
اور جب اس اکیلے اللہ کا ذکر کیا جاتا ہے تو ان لوگوں کے دل تنگ پڑجاتے ہیں جو آخرت پر یقین نہیں رکھتے اور جب ان کا ذکر ہوتا ہے جو اس کے سوا ہیں تو اچانک وہ بہت خوش ہوجاتے ہیں۔

تفسیر:
وَاِذَا ذُكِرَ اللّٰهُ وَحْدَهُ اشْمَاَزَّتْ ۔۔ : ” اِشْمَأَزَّ “ نفرت سے بھر گیا، تنگ پڑگیا۔ یہ بات دنیا بھر کے مشرکوں میں مشترک ہے، خواہ وہ نام کے مسلمان کیوں نہ ہوں کہ کوئی شخص اکیلے اللہ کا اور اس کی کبریائی اور توحید کا ذکر کرے تو ان کے دل نفرت سے بھر جاتے ہیں اور تنگ پڑجاتے ہیں اور ان کے چہروں پر ناگواری اور نفرت کے آثار نمایاں ہوجاتے ہیں۔ کہتے ہیں یہ شخص اولیاء اور بزرگوں کو نہیں مانتا، اسی لیے صرف اللہ ہی کی بات کرتا چلا جاتا ہے، نہ کسی ولی کی قوت و تصرف کا ذکر کرتا ہے جو (ان کے خیال میں) اللہ تعالیٰ کی تقدیر کا تیر راستے سے واپس ہٹا لاتے ہیں اور نہ کسی دستگیر یا گنج بخش یا مشکل کشا کی دستگیری یا مشکل کشائی کا بیان کرتا ہے، جیسا کہ اللہ تعالیٰ نے دوسری جگہ فرمایا : ( ۭ وَاِذَا ذَكَرْتَ رَبَّكَ فِي الْقُرْاٰنِ وَحْدَهٗ وَلَّوْا عَلٰٓي اَدْبَارِهِمْ نُفُوْرًا ) [ بني إسرائیل : ٤٦ ] ” اور جب تو قرآن میں اپنے رب کا، اکیلے اسی کا ذکر کرتا ہے تو وہ بدکتے ہوئے اپنی پیٹھوں پر پھرجاتے ہیں۔ “
الَّذِيْنَ لَا يُؤْمِنُوْنَ بالْاٰخِرَةِ : یعنی اکیلے اللہ کے ذکر پر ان کے دلوں کے تنگ پڑنے کی وجہ آخرت پر یقین نہ ہونا ہے، اگر آخرت پر یقین ہوتا اور وہ ایمان رکھتے کہ ہمیں اس دن اس اکیلے کے سامنے پیش ہو کر اپنے اعمال کا حساب دینا ہے تو وہ ایسا کبھی نہ کرتے۔
وَاِذَا ذُكِرَ الَّذِيْنَ مِنْ دُوْنِهٖٓ۔ : ” يَسْتَبْشِرُوْنَ “ باب استفعال میں حروف زیادہ ہونے کی وجہ سے معنی میں بھی زیادتی ہوتی ہے، یعنی بہت خوش ہوجاتے ہیں، جیسا کہ ” اِشْمَاَزَّتْ “ میں حروف کی زیادتی ان کی نفرت اور دل کی تنگی کے زیادہ ہونے کا اظہار کرتی ہے۔ ” اِشْمِءْزَازٌ“ اور ” اِسْتِبْشَارٌ“ کے الفاظ سے ظاہر ہے کہ اکیلے اللہ کے ذکر پر دل کی تنگی میں اور من دون اللہ کے ذکر پر اس کی خوشی میں وہ انتہا کو پہنچے ہوئے ہوتے ہیں۔ ” اذا “ مفاجات کے لیے ہے ” اچانک “ یعنی جب اللہ تعالیٰ کے ساتھ یا اس کے بغیر اس کے سوا اور ہستیوں کا ذکر کیا جائے اور ان کی جھوٹی سچی کرامات بیان ہونا شروع ہوں تو اچانک ان کے چہروں پر خوشی پھیل جاتی ہے۔ مفسر آلوسی نے روح المعانی میں اپنا تجربہ لکھا ہے کہ ایک دن میں نے ایک آدمی سے کہا جو اپنی کسی مشکل میں کسی فوت شدہ سے استغاثہ کر رہا تھا اور اسے پکار کر کہہ رہا تھا کہ اے فلاں ! میری مدد کر۔ میں نے اس سے کہا، تم ” یا اللہ “ کہو، کیونکہ اللہ تعالیٰ نے فرمایا ہے : (وَاِذَا سَاَلَكَ عِبَادِيْ عَنِّىْ فَاِنِّىْ قَرِيْبٌ ۭ اُجِيْبُ دَعْوَةَ الدَّاعِ اِذَا دَعَانِ ) [ البقرۃ : ١٨٦ ] ” اور جب میرے بندے تجھ سے میرے بارے میں سوال کریں تو بیشک میں قریب ہوں، میں پکارنے والے کی دعا قبول کرتا ہوں جب وہ مجھے پکارتا ہے۔ “ تو وہ شخص سخت غصے میں آگیا۔ بعد میں لوگوں نے مجھے بتایا کہ وہ کہتا تھا، یہ شخص اولیاء کا منکر ہے۔ کچھ لوگوں نے مجھے یہ بھی بتایا کہ اس نے کہا، اللہ تعالیٰ کی بہ نسبت ولی جلدی سن لیتے ہیں۔ اللہ تعالیٰ ہمیں گمراہی سے محفوظ رکھے۔

14/05/2022

👥سیاست دان جتنے مرضی بڑے جلسے کرلیں ،
الیکشن پر رنگ خاکی ہی چڑھنا ہے ! 👥
ایک مراثی فوج میں بطور رنگ ساز بھرتی ہوا 😊 جب ریٹائر ہوا تو جو پیسے ملے اس سے کپڑے رنگنے کی دکان ڈال لی کہ ساری زندگی یہی کام کیا تھا- اب پہلے ہی دن محلے سے ایک لڑکی دوپٹہ رنگوانے آگئی🤗 اور فرمائش کی “ چاچا دوپٹّے پر آتشی پنک رنگ کر دو”- اب مراثی نے ساری زندگی خاکی وردیاں رنگی تھیں اس کے بڑے بھی نہ جانیں کہ آتشی پنک کس بلا کا نام ہے🤔 تو کہنے لگا بیٹا جی دفعہ مارو آتشی پنک تم خاکی رنگ کروا لو دوپٹّے پر اچھا لگے گا😇 لڑکی بولی وہ چچا آتشی پنک نا میرے سوٹ کے ساتھ میچ کرتا ہے - مراثی تھوڑا چپ رہ کر بولا بیٹا خاکی کروا لو خاکی رنگ ٹھنڈا ہوتا ہے 😚لڑکی تھوڑی تیز آواز میں “ چچا آپ آتشی پنک ہی کرو میری چوڑیاں بھی اسی کلر میں ہیں☹️”مراثی بولا “دیکھو بیٹا جی یہ جو خاکی رنگ ہوتا ہے نا یہ بڑا پکا ہوتا ہے باقی سارے رنگ کچے ہوتے ہیں😋”اب لڑکی نے دوپٹہ غصے سے چھین لیا اور بولی” چاچا لگتا ہے تمھیں باتوں کے علاوہ اور کچھ نہیں آتا 😕میں کہیں اور سے رنگ کروا لوں گی”مراثی نے غصے سے دوپٹہ واپس چھینا اور غصے سے بولا”☹️ لاؤ ادھر میں رنگ آتشی پنک ہی کروں گا مگر یاد رکھنا سوکھ کر اس نے پھر خاکی ہو جانا ہے”🤭
سیاست دان جتنے مرضی بڑے جلسے کرلیں😉 ،
الیکشن پر رنگ خاکی ہی چڑھنا ہے ! 🙂🤣🤣🤣🤣 اسلیئے آرام سے بیٹھ کر انجوائے کریں آپس کے تعلقات خراب نہ کریں
_______...بشکریہ سید حامد علی بخاری ۔
منقول۔۔۔۔
ویسے میری بھی یہی رائے ہے

10/05/2022

عربی گرائمر کورس ۔
عربی گرائمر کورس تین ماہ کا ہو گا جس میں ابتدائی عربی گرائمر سکھائی جاے گی ۔
کلاس زوم یا ٹیم ایپ پر ہو گی ۔وقت 5:50 پر ان شاءاللہ ۔دوارنیہ کلاس ۔ 30 منٹ ۔
اس کلاس میں شرکت کرنے والوں کو ہر مہینہ ڈونیشن فنڈ ۔500 روپیہ ۔
خواہشمند خواتین و حضرات
جلد رابطہ فرما لیں
کلاس کا آغاز ۔
16 مئی سوموار کو ہو گا ۔
براے ایڈمیشن ۔
03338368884
براے کرم اس نمبر پر اپنا نام ۔ تعلیم اور علاقہ ۔واٹس ایپ کر دیں ۔
ڈاکٹر محمد عرفان سعید

دورہ قرآن ۔ 30 پارے کے مضامین کا خلاصہ اور دعا ختم القرآن 01/05/2022

دورہ قرآن ۔ 30 پارے کے مضامین کا خلاصہ اور دعا ختم القرآن

الحمد للّہ ہمارا دورہ قرآن آج مکمل ہو رہا ہے ۔مکمل پارے کے مضامین کے بعد دعا میں بھی ضرور شامل ہو جائیں ۔
اللہ تعالی ہم سب کے دلوں کو قرآن کے نور سے منور فرماے اور قرآن مجید سے نصیحت حاصل کر کے اپنے آپ کو بدلنے کی توفیق عطا فرمائے آمین ثم آمین یا رب العالمین۔
آپ سب کا بہت بہت شکریہ

https://youtu.be/pa0nVeqATKU

دورہ قرآن ۔ 30 پارے کے مضامین کا خلاصہ اور دعا ختم القرآن معلم ۔محمد عرفان سعید

29/04/2022

سیاسی فرقہ واریت
ایک مسلمان دوسرے مسلمان کا خیر خواہ ہوتا ہے یہ شرط ہے مسلمان ہونے کی آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے فرمان کے مطابق اس وقت تک کوئی مسلمان نہیں ہو سکتا جب تک آپنے مسلمان بھائی کے لیے وہی نہ پسند کریں جو اپنے لیے پسند کرتا ہے جو ہمارے ملک کی سیاست کو لے کر ہو رہا ہے عدم برداشت عروج پر ہے حرم مکی اور حرم مدنی بھی اب محفوظ نہیں ہے وہاں بھی ایک دوسرے کے خلاف نعرے لگائے جاتے ہیں مساجد اللہ کا گھر ہیں مساجد میں بھی سیاسی تعصب کا اظہار کیا جا رہا ہے ۔یہ حالات واضح ہیں کہ ہماری قوم اخلاقی اور روحانی تباہی کے دھانے پر پہنچ گئ ہے ۔جس طرح مسلکی فرقہ واریت سے منع کیا گیا ہے اسی طرح سیاسی فرقہ واریت منع ہے ۔سورہ التوبہ میں مسجد ضرار جو منافقین نے سیاسی فرقہ واریت کے لیے بنائی تھی اللہ تعالیٰ نے اس مسجد کو گرا دینے کا حکم دیا ۔اپنی تحقیق کے مطابق عمل کرنے کا ہر ایک کو حق ہے لیکن بد تمیزی اور نفرت اگر کریں گی تو اسلام کے دائرے میں نہیں ہو سکتے ہے اسلام کی بنیادی تعلیم مسلمان وہ ہے جس کی زبان سے دوسرے مسلمان محفوظ رہیں ۔ اور مسلمان خیر خواہ ہوتا ہے مسلمان کا ۔مسلمان سے نفرت نہیں کرتا ۔ھذا ما عندی واللہ اعلم بالثواب ۔
ڈاکٹر محمد عرفان سعید

دورہ قرآن ۔ سیپارہ 27 کے مضامین کا خلاصہ 28/04/2022

دورہ قرآن ۔ سیپارہ 27 کے مضامین کا خلاصہ

السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ آج 27 رات ہے اس لیے آج پارہ نمبر 27 کا خلاصہ بھی بھیجا جا رہا ہے ۔
لازمی سن کر ثواب حاصل کریں ۔
اللہ تعالیٰ آپ سب پر کرم فرماے اور ہم سب کے گناہ معاف فرمائے ۔امین ثم آمین یا رب العالمین

https://youtu.be/aH8XxOA1HVI

دورہ قرآن ۔ سیپارہ 27 کے مضامین کا خلاصہ معلم۔ محمد عرفان سعید

26/04/2022

اللہ کے دین کی نصرت کے لیے مدد کی اپیل ۔
پیغام قرآن فاؤنڈیشن سیالکوٹ اللہ کے دین کی تعلیمات کو آسان سے آسان ترین انداز میں اللہ کے بندوں تک پہنچانے کے لیے بنائی گئی ہے الحمد للّہ اب تک ہزاروں لوگ دین آسان انداز میں سیکھ چکے ہیں اور کئی سیکھ رہے ہیں ۔ہمارے دو ادارے کام کر رہے ہیں ۔پیغام قرآن سنٹر براۓ خواتین ۔
پیغام قرآن سنٹر فار آل ۔
فزیکلی بھی کلاسز ہوتی ہیں اور زیادہ آن لائن ۔اب ہماری باقاعدہ ویب سائٹ بن چکی ہے جس پر مزید کام جاری ہے ۔
ہم رمضان کے بعد مندرجہ ذیل کورس شروع کر رہے ہیں ۔
فہم قرآن کورس ۔
عربی گرائمر کورس
حدیث و علوم حدیث کورس
قرآن و علوم قرآن کورس
تجوید کورس ۔
یہ کورسز فزیکلی بھی ہوں گے اور ان لائن بھی ۔
ان کورسز کو بھرپور انداز میں کروانے کے لیے ہمیں کے تعاون کی ضرورت ہے ۔۔
اللہ کا قرآن میں فرمان ہے ۔من یقرض اللہ قرضا حسنا فیضعفہ اضعافا کثیرا ۔
ترجمہ ہوں ہے جو اللہ ہو قرض حسنہ دیں تو اللہ اس کو بڑھا چڑھا کر ثواب دیں ۔
اللہ کو قرض حسنہ سے مراد اللہ کے دین کی مدد ہے ۔
آپ سب ے میری اپیل ہے اس مشن میں ضرور اپنا فنڈ دیں جتنی طاقت کے چاہے ایک ہزار ہی کیوں نہ ہو ۔
مندرجہ ذیل اکاؤنٹس میں پیسے بھیج کر رسید ضرور اس نمبر پر بھیج دیں ۔03338368884
الائیڈ بینک ۔
08890010083688840011
Muhammad Irfan
Meezan bank account.
06060104808905
Muhammad Irfan
Easy paisa account.
03462369486
العارض۔ ڈاکٹر محمد عرفان سعید ۔خادم پیغام قرآن فاؤنڈیشن سیالکوٹ

دورہ قران الکریم کا چوبیسواں پارہ محمد عرفان سعید 26/04/2022

دورہ قران الکریم کا چوبیسواں پارہ محمد عرفان سعید

https://youtu.be/kAv5cUs9hTk

دورہ قران الکریم کا چوبیسواں پارہ محمد عرفان سعید

سیپارہ نمبر 22 کے مضامین کا خلاصہ 23/04/2022

سیپارہ نمبر 22 کے مضامین کا خلاصہ

https://youtu.be/C4gLVTQWiL8

سیپارہ نمبر 22 کے مضامین کا خلاصہ معلم ۔محمد عرفان سعید

دورہ قرآن ۔ اکیسویں پارے کے مضامین کا خلاصہ 22/04/2022

دورہ قرآن ۔ اکیسویں پارے کے مضامین کا خلاصہ

https://youtu.be/GHEn_kE1DZI

دورہ قرآن ۔ اکیسویں پارے کے مضامین کا خلاصہ معلم ۔محمد عرفان سعید

دورہ قرآن۔ پندرہویں پارے کے مضامین کا خلاصہ 16/04/2022

دورہ قرآن۔ پندرہویں پارے کے مضامین کا خلاصہ

https://youtu.be/sqT2yDgOaM8
دورہ قرآن الکریم ۔سبق نمبر 15 ۔
پارہ نمبر 15 کے مضامین کا خلاصہ

دورہ قرآن۔ پندرہویں پارے کے مضامین کا خلاصہ

دورہ قرآن ۔ گیارویں پارے کے مضامین کا خلاصہ 13/04/2022

دورہ قرآن ۔ گیارویں پارے کے مضامین کا خلاصہ

گیارہ نمبر پارے کے مضامین و احکام و مسائل

https://youtu.be/O37IohTCuCw

دورہ قرآن ۔ گیارویں پارے کے مضامین کا خلاصہ

دورہ قرآن ۔ دسویں پارے کے مضامین کا خلاصہ 12/04/2022

دورہ قرآن ۔ دسویں پارے کے مضامین کا خلاصہ

https://youtu.be/KvyFAqu4vVk

دورہ قرآن ۔ دسویں پارے کے مضامین کا خلاصہ

10/04/2022

کہتا ہوں وہی بات سمجھتا ہوں جسے حق
نہ ابلہ مسجد ہوں نہ تہذیب کا فرزند
اپنے بھی خفا مجھ سے ہیں بیگانے بھی نا خوش
میں زہر ہلاہل کو کبھی کہ نہ سکا قند ۔
آج تک میں نے کسی سیاسی پارٹی کو سپورٹ نہیں کیا لیکن آج میں عمران خان کو سپورٹ کر رہا ہوں اس کی مندرجہ ذیل وجوہات ہیں ۔
سب سے بڑی وجہ عمران خان نے حرمت رسول پر جان بھی قربان ہے یہ نعرہ اقوام متحدہ میں لگایا ۔اسی وجہ سے یہ بات کہنے پر مجھے فخر ہے ۔نبی کا جو غلام ہے ہمارا وہ امام ہے ۔دوسری وجہ ۔ اسلام کے خلاف جو لوگ ہیں انٹرنیشنل اقوام متحدہ میں 15 مارچ کو عالمی دن قرار دلوایا کوئی مانے یا نہ مانے اس کے پیچھے عمران خان ہے ۔
تیسری وجہ ۔
اللہ تعالیٰ نے قرآن مجید میں فرمایا ۔یہودی اور عیسائی تم سے راضی نہیں ہو سکتے ہیں عمران کی حکومت گرانے میں سب سے زیادہ خوشی امریکہ انڈیا اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے کارٹون شائع کرنے والے ملعون کو ہوئی ہے ۔سب سے پہلے اس نے ٹویٹ کی ۔
امام مالک نے فرمایا اگر حق اور باطل کو پہچاننے میں مشکل ہو تو دیکھو باطل کے تیر کس کے خلاف جا رہے ہیں باطل کی تیر جس کے خلاف ہیں وہی حق ہے ۔
ایک وجہ عمران کو سپورٹ کرنے کی ۔1947 سے لے کے اب تک ترجمہ قرآن کو کسی نے سلیبس کا حصہ نہیں بنایا عمران کی حکومت نے ترجمہ القرآن کو سیلبس کا حصہ بنا دیا اب کوئی بھی ڈگری نہیں کے سکتا جب تک قرآن مجید کا مکمل ترجمہ نہ پڑھ لیں ۔
عمران خان کا قصور ۔
میری غربت نے اڑایا میرے فن کا مزاق تیری دولت نے تیرے عیب چھپا رکھے ہیں ۔
آخری بات ۔
اگر عمران خان کرپٹ ہوتا تو کبھی بھی علیم خان اور جہانگیر ترین خان کو کبھی مخالف نہ ہونے دیتا جب ان دونوں کی کرپشن واضح ہو گئ تو عمران خان نے ان دونوں سے راستے جدا کر لیے ۔
اب بھی نہ سمجھو گے تو مٹ جاؤ گے اے پاکستان والوں تمہاری داستان تک نہ ہو گی داستانوں میں ۔
ڈاکٹر محمد عرفان سعید

دورہ قرآن کا سبق نمبر 7. ساتویں پارے کے مضامین کا خلاصہ 09/04/2022

دورہ قرآن کا سبق نمبر 7. ساتویں پارے کے مضامین کا خلاصہ

https://youtu.be/FCiki3zPJJU

دورہ قرآن کا سبق نمبر 7. ساتویں پارے کے مضامین کا خلاصہ The main aim of Paigham-e-Quran Foundation Sialkot is to spread maximum Quran knowledge in easy way. Facebook : https://www.facebook.com/paighamequran888/Off...

دورہ قرآن کا سبق نمبر 6 ۔ سیپارہ نمبر 6 کے مضامین کا خلاصہ 08/04/2022

دورہ قرآن کا سبق نمبر 6 ۔ سیپارہ نمبر 6 کے مضامین کا خلاصہ

https://youtu.be/0K9p7Wq90Gw

دورہ قرآن کا سبق نمبر 6 ۔ سیپارہ نمبر 6 کے مضامین کا خلاصہ The main aim of Paigham-e-Quran Foundation Sialkot is to spread maximum Quran knowledge in easy way. Facebook : https://www.facebook.com/paighamequran888/Off...

دورہ قرآن ۔ پانچویں پارے کے احکام و مسائل و مضامین کا خلاصہ 06/04/2022

دورہ قرآن ۔ پانچویں پارے کے احکام و مسائل و مضامین کا خلاصہ

https://youtu.be/L0bNBuX6AVE

دورہ قرآن ۔ پانچویں پارے کے احکام و مسائل و مضامین کا خلاصہ The main aim of Paigham-e-Quran Foundation Sialkot is to spread maximum Quran knowledge in easy way. Facebook : https://www.facebook.com/paighamequran888/Off...

دورہ قرآن کا پہلا سیپارا 03/04/2022

دورہ قرآن کا پہلا سیپارا

دورہ قرآن پارہ نمبر 1 کے مضامین کا خلاصہ

https://youtu.be/476A1T5htKs

دورہ قرآن کا پہلا سیپارا

دورہ قرآن فی رمضان 2022 02/04/2022

دورہ قرآن فی رمضان 2022

https://chat.whatsapp.com/EGJPC2CXhcpEHVCfHjWDvt
اس رمضان المبارک میں روزانہ ایک پارے کے مضامین کا خلاصہ بیان کیا جاے گا ان شاءاللہ ۔
تفسیر القرآن الکریم مفسر حافظ عبد السلام بن محمد بھٹوی حفظہ اللہ جو کہ میرے استاد محترم کی تفسیر ہے ۔اسی طرح تفسیر تفھیم القرآن مولانا ابو الاعلیٰ مودودی رحمہ اللہ کی تفسیر اور ڈاکٹر اسرار احمد رحمہ اللہ کی تفسیر اور تفسیر تیسیر القرآن مولانا عبد الرحمان کیلانی رحمہ اللہ کی تفسیر اور پیر کرم شاہ صاحب الازہری رحمہ اللہ کی تفسیر ضیاء القرآن ۔مندرجہ بالا تفاسیر کے علمی نکات ہر پارے میں بیان کیے جاۓ گے ان شاءاللہ ۔
ان پانچوں تفاسیر کا ان شاءاللہ خلاصہ بیان کیا جاے گا ۔
اس رمضان میں عزم کریں کہ ان شاءاللہ ہم نے یہ دورہ قرآن لازمی کرنا ہے ۔
آپ صلی اللہ علیہ وسلم ہر رمضان المبارک میں دورہ قرآن کیا کرتے تھے ۔
دورہ قرآن کرنا آپ کی سنت بھی ہے اور قرآن مجید کے نزول کا مقصد بھی ہے جزاکم اللہ خیرا ۔
العارض۔ محمد عرفان سعید پیغام قرآن فاؤنڈیشن سیالکوٹ

دورہ قرآن فی رمضان 2022 WhatsApp Group Invite

دورہ قرآن فی رمضان 2022 29/03/2022

دورہ قرآن فی رمضان 2022

https://chat.whatsapp.com/EGJPC2CXhcpEHVCfHjWDvt
اس رمضان المبارک میں روزانہ ایک پارے کے مضامین کا خلاصہ بیان کیا جاے گا ان شاءاللہ ۔
تفسیر القرآن الکریم مفسر حافظ عبد السلام بن محمد بھٹوی حفظہ اللہ جو کہ میرے استاد محترم کی تفسیر ہے ۔اسی طرح تفسیر تفھیم القرآن مولانا ابو الاعلیٰ مودودی رحمہ اللہ کی تفسیر اور ڈاکٹر اسرار احمد رحمہ اللہ کی تفسیر اور تفسیر تیسیر القرآن مولانا عبد الرحمان کیلانی رحمہ اللہ کی تفسیر اور پیر کرم شاہ صاحب الازہری رحمہ اللہ کی تفسیر ضیاء القرآن ۔مندرجہ بالا تفاسیر کے علمی نکات ہر پارے میں بیان کیے جاۓ گے ان شاءاللہ ۔
ان پانچوں تفاسیر کا ان شاءاللہ خلاصہ بیان کیا جاے گا ۔
اس رمضان میں عزم کریں کہ ان شاءاللہ ہم نے یہ دورہ قرآن لازمی کرنا ہے ۔
آپ صلی اللہ علیہ وسلم ہر رمضان المبارک میں دورہ قرآن کیا کرتے تھے ۔
دورہ قرآن کرنا آپ کی سنت بھی ہے اور قرآن مجید کے نزول کا مقصد بھی ہے جزاکم اللہ خیرا ۔
العارض۔ محمد عرفان سعید پیغام قرآن فاؤنڈیشن سیالکوٹ

دورہ قرآن فی رمضان 2022 WhatsApp Group Invite

دورہ قرآن فی رمضان 2022 22/03/2022

دورہ قرآن فی رمضان 2022

https://chat.whatsapp.com/EGJPC2CXhcpEHVCfHjWDvt
اس رمضان المبارک میں روزانہ ایک پارے کے مضامین کا خلاصہ بیان کیا جاے گا ان شاءاللہ ۔
تفسیر القرآن الکریم مفسر حافظ عبد السلام بن محمد بھٹوی حفظہ اللہ جو کہ میرے استاد محترم کی تفسیر ہے ۔اسی طرح تفسیر تفھیم القرآن مولانا ابو الاعلیٰ مودودی رحمہ اللہ کی تفسیر اور ڈاکٹر اسرار احمد رحمہ اللہ کی تفسیر اور تفسیر تیسیر القرآن مولانا عبد الرحمان کیلانی رحمہ اللہ کی تفسیر اور پیر کرم شاہ صاحب الازہری رحمہ اللہ کی تفسیر ضیاء القرآن ۔مندرجہ بالا تفاسیر کے علمی نکات ہر پارے میں بیان کیے جاۓ گے ان شاءاللہ ۔
ان پانچوں تفاسیر کا ان شاءاللہ خلاصہ بیان کیا جاے گا ۔
اس رمضان میں عزم کریں کہ ان شاءاللہ ہم نے یہ دورہ قرآن لازمی کرنا ہے ۔
آپ صلی اللہ علیہ وسلم ہر رمضان المبارک میں دورہ قرآن کیا کرتے تھے ۔
دورہ قرآن کرنا آپ کی سنت بھی ہے اور قرآن مجید کے نزول کا مقصد بھی ہے جزاکم اللہ خیرا ۔
العارض۔ محمد عرفان سعید پیغام قرآن فاؤنڈیشن سیالکوٹ

دورہ قرآن فی رمضان 2022 WhatsApp Group Invite

آئیں قرآن سمجھیں 12/03/2022

آئیں قرآن سمجھیں

https://chat.whatsapp.com/KE01mYPSj8X9DvJ7jb8Pir
قرآن اور رمضان کا بڑا گہرا تعلق ہے قرآن مجید رمضان المبارک میں نازل ہوا ۔قران مجید کا نزول کا مقصد قرآن حکیم کو سمجھ کر عمل کرنا ہے لیکن افسوس آج کا مسلمان قرآن مجید سے ظاہری طور پر محبت تو کرتا ہے لیکن قرآن سمجھنے کی کوشش نہیں کرتا ۔قران حکیم کو سمجھنے کے لیے وقت نہیں نکالتا ۔
آپ سب سے گزارش ہے اب رمضان المبارک کے سایہ فگن ہونے سے پہلے قرآن مجید کو سمجھنے کے اس کورس میں شامل ہو جائیں اور قرآن مجید کو سمجھنے والے بن جائیں ۔14 مارچ سوموار سے فہم قرآن کورس ہم کروا رہے ہیں آئیں قرآن سمجھیں کے عنوان سے بالکل فری کورس ہے ۔واٹسایپ گروپ کے ذریعے آپ اسباق بھجیں جائیں روازنہ ٹیسٹ ہو گا اور آخر میں آپ کو سرٹفکیٹ بھی دیے جائیں گے روازنہ صرف 15 منٹ نکالیں اور قرآن مجید کو سمجھنے کی پہلی سیڑھی پر آئیں اور قرآن مجید سے نصیحت حاصل کریں ۔
اس لنک کے ذریعے اس کورس میں شامل ہو جائیں ۔
نوٹ ۔جن لوگوں نے فہم قرآن کورس پہلے مجھ سے کیا ہوا ہے وہ شامل نہ ہو کیونکہ یہ بلکل وہی کورس ہے جو پہلے آپ نے کیا ہے ۔اطننے جاننے والوں کو اس کورس میں شامل کرائیں ۔جزاک اللہ خیرا

آئیں قرآن سمجھیں WhatsApp Group Invite

متکبر ظالم اور کے شر سے بچنے کی قرآنی دعا 24/01/2022

متکبر ظالم اور کے شر سے بچنے کی قرآنی دعا

متکبر ظالم اور کے شر سے بچنے کی قرآنی دعا

فہم قرآن کورس کا سبق نمبر 1 01/01/2022

فہم قرآن کورس کا سبق نمبر 1

https://youtu.be/8fc1VNJNEkA

فہم قرآن کورس کا سبق نمبر 1 The main aim of Paigham-e-Quran Foundation Sialkot is to spread maximum Quran knowledge in easy way. Facebook : https://www.facebook.com/paighamequran888/Off...

جنوری فہم قرآن کورس 31/12/2021

جنوری فہم قرآن کورس

اللہ تعالی ہم سب کے پچھلے سال کے گناہ معاف فرماے اور 2022 کو ہم سب کو توفیق دے کہ 2022 میں قرآن مجید کو سمجھ کر پڑھنے کے قابل ہو جایئں آمین ثم آمین یا رب العالمین۔
یکم جنوری سے کل ان شاء اللہ ہمارا فہم قرآن کورس شروع ہو رہا ہے ۔یہ کورس کر کے آپ لوگ قرآن مجید کے الفاظ کے معانی سمجھنے کے قابل ہو جائیں گے کم ازکم آدھے قرآن مجید کے الفاظ ان شاء اللہ۔
آپ سے گزارش ہے کہ عزم کریں کہ آپ نے روزانہ لیکچر سن کر ٹیسٹ ضرور دینا ہے یہ آپ وعدہ کر لیں میں آپ سے وعدہ کرتا ہوں ان شاء اللہ یہ کورس کرنے کے بعد آپ کو کافی حد تک قرآن مجید کے معانی کا پتہ ہو گا تو پھر دیر کیسی ائیں اور اس کورس میں شامل ہو جائیں ۔یہ کورس واٹسایپ گروپ کے ذریعے ہو گا 24 گھنٹوں میں کسی بھی وقت آپ لیکچر سن کر ٹیسٹ دے سکتے ہیں ۔ العارض ۔محمد عرفان سعید استاد فہم قرآن کورس ۔
اس لنک کے ذریعے کورسیں ڈال ہو جائیں ۔
https://chat.whatsapp.com/KehPQ9s0oEw9sNBeF0Wegt

جنوری فہم قرآن کورس WhatsApp Group Invite

25/12/2021

السلام علیکم ورحمت اللہ وبرکاتہ۔
جن سٹوڈنٹس کا انٹر مکمل ہو گیا ہے یا بی اے یا بی ایس سی ۔مکمل کر لی ہے ۔یا بی ایس انر مکمل ہے اور وہ یورپ مزید تعلیم حاصل کرنے کے لیے جانا چاہتے ہیں ۔شرط یہ ہے کہ وہ محنتی ہوں اور زندگی میں ترقی کرنا چاہتے ہیں وہ مجھ سے رابطہ کر لیں ۔مزید تفصیل مندرجہ ذیل ہے ۔
*For intermediate*
Not more than 3 years gap
Age not more than 21
*For bachelor 2 years degree*
Gap not more than 4 to 5 years
Mini 3 years job experience
Age not more than 25
For BS or 2 years Masters
Gap not more than 5 years
Gap should complete with experience
Age limit not more than 30

23/12/2021

السلام علیکم جناب عالی گزارش ہے کہ ہمارے پاس ہر قسم کے موبائل دستیاب ہوتے ہیں ۔پرانے موبائل کی بہت اچھی قیمت میں ہم خریداری کرتے ہیں اپنے پرانے فون مجھے سیل کریں نوازش ہو گی ۔
ایڈریس۔ بسراء الیکٹرو مارٹ ۔علامہ اقبال چوک فرنٹ اف شیل پیٹرول پمپ ۔

22/12/2021
دسمبر فہم قرآن کورس 2 29/11/2021

دسمبر فہم قرآن کورس 2

https://chat.whatsapp.com/KleLIQSDhMb8uF5qSbwAdm
پہلا گروپ فہم قرآن کورس کا فل ہو گیا ہے اپنے جاننے والوں کو اب اس گروپ کا پنک بھیج دیں جزاک اللہ خیرا
قرآن مجید کو سمجھ کر پڑھنے کی تحریک میں شامل ہو جائیں اور اس مشن میں ہمارے مدد گار بن جائیں

دسمبر فہم قرآن کورس 2 WhatsApp Group Invite

28/11/2021
26/11/2021

مٹا دے اپنی ہستی کو گر کچھ مرتبہ چاہے ۔کہ دانہ خاک میں مل کر گل گلزار ہوتا ہے
ارادے جن کے پختہ ہوں نظر جن کی خدا پر ہو۔ تلاطم خیز موجوں سے وہ گھبرایا نہیں کرتے ۔
ایک وقت تھا جب آٹھویں کلاس کی رولنمبر سلپ لانے کے لیے پیسے نہیں تھے میری رولنمبر سلپ نہ آئی سیالکوٹ جا نے کے پیسے نہیں تھے کہ وہاں سے جا کر رولنمبر سلپ لائی جاے ۔اور ایک وقت جب اللہ کا دین پڑھنے کا اتنا شوق اور جنون تھا 300 روپے مہینے کی تنخواہ پر کام کیا اور والدہ محترمہ کا دیدار آ کر کرتا گھر آنے کے پیسے نہیں ہوتے تھے وقت گزرتا رہا رب کی مدد شامل حال رہی ۔بہت محسن بھی ہیں میرے سب کا شکر گزار ہوں بتانے کا مقصد جب رکاوٹیں بہت ہوں جب مشکلات بہت ہوں جب کوئی راستہ نظر نہ آتا ہو ادھر ہی حل بھی موجود ہوتا ہے بس رب سے مدد مانگ لی جاے تو سب مسئلے حل ہو جاتے ہیں 2010 کو الحمد للہ درس نظامی کا کورس مکمل کیا اور فاضل علوم اسلامیہ قرار پایا ۔لیکن ایک تشنگی تھی ایک پیاس تھی دین کا علم تو پڑھ لیا اب دنیا کا علم یا یوں کہا جاسکتا ہے یونیورسٹی کی بھی تعلیم ہونی چاہے 2015 میں ایم فل میں داخلہ لیا مقالہ کا موضوع سوچا کیا ہو تو سمجھ آئی امت کو اس وقت ضرورت اتحاد امت کی ہے تو مقالہ میں نے لکھا ۔ہم آہنگی بین المسالک کی ضرورت و اہمیت تعلیمات نبوی کے تناظر میں ۔اسان الفاظ میں کچھ یوں ہے ۔ اتحاد امت پر مقالہ لکھا ثابت کیا کہ 1389 مسائل می۔ تمام امت متحد ہے یہ فرقے نہیں ہونے چاہے بلکہ ہم کو صرف مسلمان ہونا چاہے ۔ 17 دسمبر 2017 کو ایم فل مکمل ہوا ایم فل کا سفر بھی ایک داستان ہے ۔جنوری 2018 میں پی ایچ ڈی میں گجرات یونیورسٹی میں داخلہ لیا سفر مشکل ضرور تھا لیکن طے ہو گیا ایک پی ایچ ڈی کرنے میں ہزار رکاوٹیں آئی لیکن اللہ کی مدد سے۔ رکاوٹیں ختم ہوتی گئ میرے استاد محترم ڈاکٹر ارشد منیر لغاری صاحب نے اتنا تعاون کیا اور اتنا خلوص اور پیار دیا یہ سفر مکمل ہوا آپنے سپر وائزر استاد محترم ڈاکٹر جمیل اختر صاحب۔ نے خوب تعاون کیا اور آج میں اس قابل ہوا کہ الحمد للہ 22 نومبر کو میرا اوپن ڈیفینس ہوا یہ بھی ایک بہت بڑا مسئلہ تھا رکاوٹ تھی وہ بھی رکاوٹ دور ہوئی اور آج 27 نومبر کو اپنے ڈاکٹر ہونے کا ذکر رہا ہوں ۔
میں اپنے محسنین کا شکر گزار ہوں خصوصا اپنے والدین اپنی شریک حیات کا اور دوسرے دوستوں کا اور اپنے اساتذہ کرام کا ۔
الحمدللہ میں اب پی ایچ ڈی کا فائنل ڈیفینس کرنے میں کامیاب ہو کر پی ایچ ڈی ڈاکٹر بن چکا ہوں۔
الحمدللہ رب العالمین۔
ڈاکٹر محمد عرفان سعید

Paigham-e-Quran

The main aim of Paigham-e-Quran Foundation is to spread maximum and best Quran knowledge in easy way.

Videos (show all)

منافق کون ہوتا ہے
تفسیر سورۃ التوبہ کی آیت نمبر 4 سے 6نماز قائم کرنا مسلمان ہونے کی شرط ہے
تفسیر سورۃ التوبہ 1 سے 3 تک
سورہ الانفال کی آیت نمبر 73 سے 75 سوری الانفال کا آخری سبق
تفسیر سورۃ الانفال کی آیت نمبر 70 سے 72
تفسیر سورۃ الانفال کی آیت نمبر 66 سے 69
تفسیر سورۃ الانفال کی آیت نمبر 63 سے 65
تفسیر سورۃ الانفال کی آیت نمبر 60 سے 62
خانہ بدوش بچوں کا قرآن کا ٹیسٹ
تفسیر سورۃ الانفال کی آیت نمبر 57 سے 59
تفسیر سورۃ الانفال کی آیت نمبر 52 سے 56

Location

Telephone

Address


Sialkot
51040

Opening Hours

Monday 09:00 - 17:00
Tuesday 09:00 - 17:00
Wednesday 09:00 - 17:00
Thursday 09:00 - 17:00
Friday 09:00 - 17:00
Saturday 09:00 - 17:00

Other Counseling & Mental Health in Sialkot (show all)
SMPRO SMPRO
Model Town,
Sialkot, 51310

The human mind can be programmed, It is said that we are never given a wish without the power to ful

Apki Psychologist by Zebaish Asghar Apki Psychologist by Zebaish Asghar
Sialkot

Charges 1000rs

London Psychology Centre London Psychology Centre
Shahabpura Road
Sialkot

The team consists of Clinical Psychologists from the UK and Pakistan who provide assessments, consultancy and treatment for mental illness in online, at our centre in Sialkot and clinics in Birmingham and West London UK