Dr.Aamir Tariqi Clinic

Dr.Aamir Tariqi Clinic Doctor/Spiritual healer/Islamic Scholar
(1)

بسم اللہ الرحمٰن الرحیمھوالقادر ھوالحق ھوالمعینسورج  گرہن 14 اکتوبر 2023 🌞یہ گرہن 14 اکتوبر 2023 کی رات  10 بجکر 59 منٹ ...
13/10/2023

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
ھوالقادر ھوالحق ھوالمعین

سورج گرہن 14 اکتوبر 2023 🌞

یہ گرہن 14 اکتوبر 2023 کی رات 10 بجکر 59 منٹ کو 21 درجہ 8 دقیقہ برج میزان پر لگے گا۔

یہ جزوی گرہن ہوگا جو کہ 14 اکتوبر کی رات
8:04 منٹ سے لگنا شروع ہوگا اور رات کو
10:59 منٹ پر مکمل لگ جاے گا
یہ اسی رات کو اگے جو کہ بارہ بجے کے بعد عیسوی تاریخ تبدیل ہو جانے کی وجہ 15 اکتوبر کی قبل سحر
1:55 منٹ پر مکمل ختم ہو جاے گا ۔۔

یہ گرہن پاکستان میں رات ہونے کی وجہ سے نظر نہیں آے گا جبکہ مغربی افریقا شمالی امریکا شمالی مشرقی افریقا کے مملک بحر اقیانوس بجر الکاہل میں نظر اے گا۔

11/10/2023
11/10/2023
11/10/2023
11/10/2023

بسم اللہ الرحمٰن الرحیمھوالقادر ھوالحق ھوالمعینالحمداللہ گزشتہ 30 سال  کی طرح اس سال بھی بارویں ربیع الاول کی شب محفل جش...
29/09/2023

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
ھوالقادر ھوالحق ھوالمعین

الحمداللہ گزشتہ 30 سال کی طرح اس سال بھی بارویں ربیع الاول کی شب محفل جشن عیدمیلاد النبی صلی اللّٰہ علیہ وآلہ وسلم کا انعقاد کیا گیا ۔

اللّٰہ تعالیٰ یہ سلسلہ جاری و ساری رکھے تمام مومنین مومنات جنہوں نے محفل کی شرکت کی سب کی دلی جائز دعائیں اپنے حبیب کی شب ولادت کے صدقے قبول ؤ مقبول فرمائے ۔
سیدی مرشدی و مولائی قبلہء میاں حضور دامت برکاتہم العالیہ کو صحت کاملہ کے ساتھ درازی عمر بالخیر عطاء فرمائے اور کے ظاہری و باطنی فیوض و برکات سے ہمیں مستفیض فرمائے ۔ آمین بجاہ النبی الکریم الامین صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم 🌹

شب جمعہ کو بارویں شب ہے
27/09/2023

شب جمعہ کو بارویں شب ہے

بسم اللہ الرحمٰن الرحیمھوالقادر ھوالحق ھوالمعینلسلام علیکم ورحمۃ ﷲ وبرکاتہ ان شاء اللّٰه بروز جمعرات    28 ستمبر رات 8:3...
26/09/2023

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
ھوالقادر ھوالحق ھوالمعین

لسلام علیکم ورحمۃ ﷲ وبرکاتہ

ان شاء اللّٰه بروز جمعرات 28 ستمبر رات 8:30بجے گلستان جوہر (امکان نمبر سی119/1 بلاک 14 گلستان جوہر کراچی) میں محفل ذکر حبیب خدا بسلسلہ میلاد مصطفی صلی ﷲ عليه وآلہ وسلم کا انعقاد کیا جارہا ہے جس میں آپ کو شرکت کی دعوت دی جاتی ہے۔ خود بھی تشریف لائیں اور اپنے دوست احباب کو بھی لائیں۔
جزاکم ﷲ خیراً کثیرا

رابطہ نمبر 92 300 3390563+

https://maps.app.goo.gl/twXSqFvVUQiNKduq9

Time 🇵🇰 8:30 PM ||🇮🇳 9:00 PM || 🇺🇸 11:30AM ||🇬🇧 4:30PM

خلیفہ میاں حضور دامت برکاتہم العالیہ ||حضرت ڈاکٹر محمد عامر طارقی ||عثمانی حسنی قادری
سہروردی چشتی قلندری ابوالعلائی نقشبندی مجددی جہانگیری شطاری مداروی شازلی دامت برکاتہم العالیہ

Broadcast Live on YouTube

Subscribe to our YouTube channel to stay updated:
https://www.youtube.com/.MuhammadAamirTariqi

بسم اللہ الرحمٰن الرحیمھوالقادر ھوالحق ھوالمعینابو محمد کنیت حسن نام اور سامرہ کے محلہ عسکر میں قیام کی وجہ سے عسکری علی...
25/09/2023

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
ھوالقادر ھوالحق ھوالمعین

ابو محمد کنیت حسن نام اور سامرہ کے محلہ عسکر میں قیام کی وجہ سے عسکری علیہ السّلام مشہور لقب ہے والد بزرگوار حضرت امام علی نقی علیہ السّلام اور والدہ سلیل خاتون تھیں جو عبادت , ریاضت عفت اور سخاوت کے صفات میں پانے طبقے کے لیے مثال کی حیثیت رکھتی تھیں .اہل سنت مسلمانوں کا طبقہ بھی ان کی بڑی عزت کرتا ہے۔

ولادت

آپ کی ولادت بروز جمعہ 10 ربیع الثانی 232ھ مطابق 3 دسمبر 846ء کو مدینہ منورہ میں ہوئی۔

نشو و نما اور تربیت

بچپن کے گیارہ سال تقریباً اپنے والد بزرگوار کے ساتھ وطن میں رہے جس کے لیے کہا جاسکتا ہے کہ زمانہ اطمینان سے گزرا۔ اس کے بعد امام علی نقی علیہ السّلام کو سفر عراق درپیش ہو گیا اور تمام متعلقین کے ساتھ ساتھ امام حسن عسکری علیہ السّلام اسی کم سنی کے عالم میں سفر کی زحمتوں کو اٹھا کر سامرا پہنچے۔ یہاں کبھی قید کبھی آزادی , مختلف دور سے گزرنا پڑا مگر ہر حال میں آپ اپنے بزرگ مرتبہ باپ کے ساتھ ہی رہے۔ اس طرح باطنی اور ظاہری طور پر ہر حیثیت سے آپ علیہ السّلام کو اپنے والد بزرگوار کی تربیت وتعلیم سے پورا پورا فائدہ اٹھانے کا موقع مل سکا۔

شہادت

علمی و دینی مشاغل میں مصروف انسان کو سلطنت وقت کے ساتھ کبھی بھی مزاحمت کا کوئی خیال پیدا نہیں ہو سکتا، تبلیغ دین اور اسلام و انسانیت کا فروغ ان کا مقصد زیست ہوتا ہے ان کا بڑھتا ہوا روحانی فیض اور علمی مرجعیت لوگوں کو اپنا گرویدہ بنا لیتی ہے حق و صداقت اور عدل و انصاف ان کا خوگر ہوتا ہے یہی وجہ ہے کہ کبھی کبھی سلاطین وقت کو ان کی شخصیت ناقابل ُبرداشت ہو جاتی ہے۔ جس کی وجہ سے کبھی یہی چیز ان کی موت کا موجب بھی بنتی ہے حضرت حسن عسکری رضی اللہ تعالٰی عنہ کی شہادت میں یہی چیز کار فرما تھی. معتمد باللہ عباسی خلیفہ کے بھجوائے ہوئے زہر سے 8 ربیع الاوّل 260ھ میں آپ نے شہادت پائی اور اپنے والد بزرگوار کی قبر کے پاس سامرا میں دفن ہوئے جہاں حضرت حسن عسکری کا روضۂ مبارک آج بھی زیارت گاہ خلائق بنا ہوا ہے۔ آپ کے بعد آپ کی زوجہ نے ام البنین کے فرزند کے ہاں پناہ حاصل کی جو نسل در نسل سادات کی خدمت و معیت و نصرت اور اعوانیت میں مشغول رہے۔

خصوصی طور پر ایصالِ ثواب اور فاتحہ خوانی کا اہتمام کریں ۔

بسم اللہ الرحمٰن الرحیمھوالقادر ھوالحق ھوالمعیاللّٰہ تعالیٰ نے سب سے پہلے نور محمدی صلی اللّٰہ علیہ وآلہ وسلم کو تخلیق ک...
22/09/2023

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
ھوالقادر ھوالحق ھوالمعی

اللّٰہ تعالیٰ نے سب سے پہلے نور محمدی صلی اللّٰہ علیہ وآلہ وسلم کو تخلیق کیا اس کے بعد اس نور سے عالم امر اور کائنات اور تمام مخلوقات کو۔ اس کے بارے میں بانیان مسلک دیوبند علماء حضرات اپنی کتابوں میں کیا تحریر فرماتے ہیں مندرجہ ذیل کے حوالہ جات کا بغور مطالعہ کریں ۔

21/09/2023

ذکر محمّد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم | ڈاکٹر محمد عامر طارقی | 21-09-2023 #محمّد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

بسم اللہ الرحمٰن الرحیمھوالقادر ھوالحق ھوالمعینثواب اور برکت کی نیت سے تمام احباب کو ان اعمال کی اجازت عام ہے ۔ 🌹
17/09/2023

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
ھوالقادر ھوالحق ھوالمعین

ثواب اور برکت کی نیت سے تمام احباب کو ان اعمال کی اجازت عام ہے ۔ 🌹

تمام عالم اسلام کے مسلمانوں کو ❣️ عرس مبارک ❣️خصوصی طور پر کثرت سے ایصالِ ثواب کا اہتمام کریں 🌹
14/09/2023

تمام عالم اسلام کے مسلمانوں کو ❣️ عرس مبارک ❣️

خصوصی طور پر کثرت سے ایصالِ ثواب کا اہتمام کریں 🌹

                 #اولیا    #روحانی  #روحانیت  #الله    #محمد
13/09/2023


#اولیا #روحانی #روحانیت #الله #محمد

بسم اللہ الرحمٰن الرحیمھوالقادر ھوالحق ھوالمعینمکتوبات امام ربانی مجدد الف ثانی شیخ احمد فاروقی سرہندی رحمۃ اللّٰہ علیہ ...
13/09/2023

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
ھوالقادر ھوالحق ھوالمعین

مکتوبات امام ربانی مجدد الف ثانی شیخ احمد فاروقی سرہندی رحمۃ اللّٰہ علیہ ❣️

جلد اول مکتوب نمبر 131

بسم اللہ الرحمٰن الرحیمھوالقادر ھوالحق ھوالمعینکل 12/09 بروز منگل کی مغرب کے بعد سے 13/09 بروز بدھ کی مغرب سے پہلے تک پڑ...
11/09/2023

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
ھوالقادر ھوالحق ھوالمعین

کل 12/09 بروز منگل کی مغرب کے بعد سے 13/09 بروز بدھ کی مغرب سے پہلے تک پڑھنا ہے ۔ دو یا تین نشستوں میں پڑھ سکتے ہیں ۔ کوئی پرہیز نہیں کرنا ہے ۔ اجازت عام ہے ۔ 🌹

07/09/2023

🌹 بسمہ اللہ الرحمن الرحیم 🌹

ھوالقادر ھوالحق ھوالمعین

❣️ دلِ مردہ ’’دل‘‘ نہیں، اُسے زندہ کر دوبارا ❣️

اللہ رب العزت نے انسان کو اپنا خلیفہ بنایا ،اس کو اشرف المخلوقات کا تمغہ دیا، انسان کی خلقت و بناوٹ میںاپنی قدرت کے انمول نظارے جلوہ گر کیے۔ یہ انسان دو چیزوں کا مرکب ہے : جسم اور روح۔ جسم اورروح کے درمیان بڑا گہرا رشتہ ہے ،دونوںساتھ رہیں تو زندگی، جدا ہوجائیں تو موت۔ ان دو عنصروںسے انسان کا تعارف ہے۔ دونوں کی نشوونما مختلف، دونوں کی غذا اور تروتازگی کی راہیں مختلف، دونوں کے سامانِ تسکین مختلف ہیں۔ جسم کا تعلق ظاہر سے ہے، روح کا باطن سے ہے۔ ایک ظاہر کی زندگی اور موت ہے، ایک باطن کی زندگی اور موت ہے۔ جس طرح دل کی تین رگیں مفلوج ہوجائیں تو ظاہر کی موت کا پتہ چلتا ہے، اسی طرح تین جگہوں پر اپنے دل (روح) کی کیفیت معلوم ہوتی ہے کہ آیا وہ زندہ ہے یا مردہ؟! اور یہی وہ روح ہے جس سے انسان کو خداشناسی حاصل ہوتی ہے، اسی سے انسان ‘ انسان بنتا ہے۔ حضرت عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ سے دریافت کیا گیا کہ دل اچھا ہے یا مردہ؟ کیسے معلوم کیا جائے؟ آپ ؓ نے فرمایا: وہ تین باتیں ہیں جن سے دل کی زندگی اور موت کا پتہ چلتا ہے، وہ تین باتیں یہ ہیں:
’’اُطلب قلبک في ثلٰث مواطن: ۱:-عند سماع القرآن، ۲:-وفي مجلس الذکر، ۳:-وفي وقت الخلوۃ، فإن لم تجدہ في ھٰذہ المواطن ، فاعلم أنہ لا قلب لک، فاسئل اللّٰہ قلبًا آخر۔‘‘
’’تین جگہوں پر اپنے کی دل کی جانچ کرو : ۱:-قرآن مجید کی سماعت(سننے) کے وقت، ۲:- ذکر کی مجلس میں، ۳:-خلوت میں (یعنی خوفِ خدا کا احساس) ۔ (تمہارا دل ان جگہوں پر مطمئن ہے تو سمجھ لو کہ دل زندہ ہے) اور اگر ان جگہوں پر دل کو نہیں پاتے، (یعنی ان جگہوں پر دل نہیں لگتا) توجان لو کہ تمہارا دل ہے ہی نہیں، (یعنی مردہ ہوگیا ہے) لہٰذا اللہ سے دوسرے (یعنی زندہ دل) کا سوال کرو ۔ ‘‘


۱:- قرآن کی سماعت

سب سے پہلی چیز قرآن مجید کی سماعت ہے۔ قرآن مجید دنیا کی وہ واحد کتاب ہے جو آج بھی اپنی اصلی شکل میں محفوظ ہے ، اور کیوں نہ ہو، جس کی حفاظت کا ذمہ اللہ نے لے رکھا ہے:’’ إِنَّا نَحْنُ نَزَّلْنَا الذِّکْرَ وَإِنَّا لَہٗ لَحٰفِظُوْنَ۔‘‘ (الحجر:۹) اس کی طرف منسوب ہر عمل باعثِ اجر وثواب ہے، اس کتاب کا پڑھنا، سننا، سمجھنا، غور وفکر کرنا، تعلیم وتعلم کرنا، جہاں اُخروی اعتبار سے فائدہ مند ہے، وہیں دنیوی لحاظ سے باعثِ خیر وبرکت اور سامانِ تسکینِ قلب ہے۔ قرآن مجید کتابِ ہدایت ہے، اس کتاب سے ہدایت اُسے ہی نصیب ہوتی ہے جو اس کا قدردان اور طالبِ ہُدیٰ ہو، جو اس کی تعلیمات پر عمل پیرا ہوگا، اس کے لیے حجت بنے گا ، اوراگر کوئی اس سے روگردانی کرے، یعنی اس کی تعلیمات پر عمل آوری نہ کرے، اُن کے خلاف بروزِ قیامت گواہی دے گا۔ مولانا علی میاں ندوی ؒ فرماتے ہیں کہ: تین باتیں ایسی ہیں وہ اگر مسلمانوں میں بھی پائی جائیں تو کلام اللہ سے استفادہ ممکن نہیں، وہ تین باتیں یہ ہیں : ۱:-تکبر، ۲:-قرآن مجید میں بغیر علم کے مجادلہ کرنا، ۳:- انکارِ آخرت اور دنیا پرستی ۔(مطالعۂ قرآن کے اصول ومبادی)
جس کا دل قرآن کریم کی تلاوت کرنے اور سننے میں لگتا ہو اور قرآن کریم کے وعدے، نصیحتیں اور وعیدات وزجر وتنبیہات اس پر اثر انداز ہوتی ہوں تو وہ جان لے کہ اس آدمی کا دل زندہ ہے، ور نہ اس کا دل مردہ ہے۔

۲:- ذکر کی مجلس

جس کا دل ذکر کی مجلس میں بیٹھنے پر آمادہ ہو تو جان لے کہ اس آدمی کا دل زندہ ہے، ور نہ وہ دل مردہ ہے۔ یاد رکھو! ایک حدیث میں ذکر کرنے والوں کو زندہ اور نہ کرنے والوں کو مردہ بتایا گیا ہے، یعنی ان کا دل ذکر نہ کرنے کی وجہ سے مردہ ہوگیا، ان کی روحانیت زندہ نہ رہی:
’’ عن أبي موسیٰ الأشعري ؓ قال: قال رسول اللّٰہ صلی اللہ علیہ وسلم : مثل الذي یذکر ربہٗ والذي لا یذکر مثل الحي والمیت۔‘‘ ( بخاری ومسلم ، بحوالہ مشکوٰۃ)
روح کی تازگی اور اس کی بقائے حیات کے لیے ذکر غذا کے مانند ہے، ورنہ ایسے قلب کا شمار مردوں میں ہوتا ہے ،قرآن مجید میں سکونِ قلب کا سامان ذکر کو بتایا گیا ہے: ’’أَلاَبِذِکْرِ اللّٰہِ تَطْمَئِنُّ الْقُلُوْبُ۔‘‘ (الرعد :۲۸)
صاحبِ تفسیرِ مظہری قاضی ثناء اللہ پانی پتی رحمۃ اللہ علیہ نے فرمایا: ’’ذکر سے مراد قرآن اور سکون سے مراد ایمان ہے۔‘‘ (تفسیر مظہری) کیونکہ ایمان دلوں کا ذریعۂ سکون اورنفاق دلوں کی بے چینی کا سبب ہے۔ اللہ کی یاد سے شیطانی وساوس دور ہوتے ہیںجو، انسان کے لیے پریشانی کا باعث ہیں ۔ ایک جگہ اللہ رب العزت نے ذکر کرنے والوں کو یہ خوشخبری دی ہے کہ جو مجھے یاد کرتا ہے اُسے میں یاد کرتا ہوں: ’’ فَاذْکُرُوْنِيْ أَذْکُرْکُمْ۔‘‘ (البقرۃ:۱۵۲)
بندہ اگر چاہے کہ اس کا تذکرہ اللہ کے یہاں ہو تو اس کو چاہیے کہ وہ اللہ کے احکاما ت کو بجا لائے کہ اس وقت میرا اللہ مجھ سے کیا چاہ رہا ہے۔ بزرگانِ دین نے اللہ کو یاد رکھنے کی آسان صورت یہ بتائی کہ آدمی جب سیڑھیوں یا کسی اور چیز پر چڑھے تو اللّٰہ أکبر ،نیچے اُترے تو سبحان اللّٰہ اور جب برابر چلے تو لاإلٰہ إلا اللّٰہ کہنے کا اہتمام کرے۔
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشادِ گرامی ہے:
’’ ہر آدمی کے دل میں دو کوٹھڑیاں ہیں: ایک میں فرشتہ اور دوسرے میں شیطان رہتاہے ، جب آدمی ذکر کرتا ہے تو شیطان ہٹ جاتا ہے ، اور اگر غافل ہوتو وساوس ڈالتا ہے۔‘‘ (بحوالہ تفسیر مظہری )

۳:-خلوت میں خدا کا خوف

تیسری علامت دل کے زندہ اور مردہ ہونے کی جو بیان کی گئی ہے ، وہ خلوت میں خدا کا خوف ہے۔ ایک طویل حدیث میں اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: سات آدمی ایسے ہیں جن کو اللہ تعالیٰ قیامت میں اپنے عرش کے سائے میں جگہ دے گا، جس دن اللہ تعالیٰ کے عرش کے سائے کے علاوہ کوئی سایہ نہ ہوگا ، اس میں سے ایک وہ آدمی بھی ہے جو تنہائی میںاللہ کے خوف سے روتا ہو :
’’سَبْعَۃٌ یُظِلُّھُمُ اللّٰہُ فِيْ ظِلِّہٖ ، یَوْمَ لَاظِلَّ إِلَّا ظِلُّہٗ ۔۔۔۔۔۔ وَرَجُلٌ ذَکَرَ اللّٰہَ خَالِیًا فَفَاضَتْ عَیْنَاہُ۔‘‘ ( صحیح البخاری ، رقم الحدیث:۶۶۰)
آدمی کا تقویٰ تنہائی میں معلوم ہوتا ہے ، جہاں اس کو کوئی نہ دیکھتا ہو اور نہ وہ کسی کو دیکھتا ہو، ایسی جگہ پراللہ سے ڈرے۔ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا : ’’اتَّقِ اللّٰہَ حَیْثُمَا کُنْتَ۔‘‘ (سنن الترمذی، رقم الحدیث:۱۹۸۷) ۔۔۔۔۔۔’’تم جہاں کہیں بھی رہو اللہ سے ڈرو۔‘‘ جلوت میں ہو یا خلوت میں، عبادات ہوں یامعاملات ،غرض ہر موقع ومحل میں اللہ سے ڈرے، کہیں ہم سے اس کی خطا نہ ہوجائے اور وہ ہم سے ناراض ہوجائے ۔ قرآن مجید میں ایک مقام پر ارشاد باری ہے :
’’إِلَّا ھُوَ مَعَھُمْ أَیْنَ مَا کَانُوْا ثُمَّ یُنَبِّئُھُمْ بِمَا عَمِلُوْا یَوْمَ الْقِیَامَۃِ۔‘‘ (سورۃ المجادلہ:۷)
’’تم جہاں کہیں بھی ہو اللہ تمہارے ساتھ ہے ، اور کل قیامت کو بتلائے گا تمہارے کیے اعمال کو ۔‘‘
ایک اور جگہ اللہ تعالیٰ کے ارشادِ گرامی کا مفہوم یہ ہے کہ:
’’اللہ تعالیٰ تقویٰ اختیار کرنے والوں کو پانچ قسم کے انعامات سے نوازے گا:
۱:-پہلا انعام دنیا وآخرت کے مصائب ومشکلات سے نجات کا راستہ ہموار کرے گا۔
۲:-دوسرا انعام یہ ہے کہ اس کو روزی ایسی جگہ سے دے گا جہاں سے اس کو گمان بھی نہ ہوگا۔
۳:-تیسرا نعام یہ ہے کہ اللہ اس کے کام کو آسان فرمائے گا۔
۴:-چوتھا انعام یہ ہے کہ اس کی سیئات کو مٹادے گا۔
۵:-پانچواں انعام یہ ہے کہ اس کے اَجر کوبڑھادے گا ۔‘‘ (سورۃ الطلاق)
حقیقت یہ ہے کہ تنہائی کا گناہ آدمی کو خدا سے اس قدر دور کردیتا ہے جس قدر تنہائی کی نیکی قریب کردیتی ہے۔ اللہ کے یہاں ساری نوعِ انسانیت برابر ہے، کسی کی برتری اور کمتری نہیں ہے: ’’مَاخَلْقُکُمْ وَلَا بَعْثُکُمْ إِلَّاکَنَفْسٍ وَّاحِدَۃٍ‘‘ اگر کوئی اللہ کے یہاں اپنا مقام بنانا چاہے تو تقویٰ اختیار کرے۔ اللہ تعالیٰ ارشاد فرماتا ہے:’’ إِنَّ أَکْرَمَکُمْ عِنْدَ اللّٰہِ أَتْقَاکُمْ۔‘‘

کسی عربی شاعر نے کیا خوب کہا ہے :
وإذا خلوت بریبۃ في ظلمۃ

والنفس داعیۃ إلی الطغیان
فاستحي من نظر الإلٰہ وقل لھا

إن الذي خلق الظلام یراني

’’جب تو کسی اندھیرے میں برائی کے لیے قدم اُٹھائے ، تیرے دل میں اس برائی کا داعیہ ہو تو اس وقت تواللہ کی نظر سے حیا کر اور نفس سے کہہ کہ جس نے اندھیرا پیدا کیا، وہ مجھے دیکھ رہا ہے۔‘‘

احقر ڈاکٹر محمد عامر طارقی

Address

Baro, Street. Block 14 Gulistan E Joher Karachi
Karachi
75300

Opening Hours

Monday 17:00 - 19:00
Tuesday 17:00 - 19:00
Wednesday 17:00 - 19:00
Sunday 11:00 - 13:00

Telephone

+923003390563

Website

Alerts

Be the first to know and let us send you an email when Dr.Aamir Tariqi Clinic posts news and promotions. Your email address will not be used for any other purpose, and you can unsubscribe at any time.

Contact The Practice

Send a message to Dr.Aamir Tariqi Clinic:

Share