Speech Language Pathologist/Therapist

Speech Language Pathologist/Therapist

Comments

Golden Opportunity for Parents# The ABLLS-R introductory workshop will provide participants with the tools to analyze and track learner skills and develop a comprehensive language-based curriculum for children. The Assessment of Basic Language and Learning Skills (The ABLLS-R) ABLLS, provide an assessment tool, curriculum guide, and skills-tracking system that will help guide the instruction of language and critical learner skills for children with autism or other developmental disabilities.
How technology has altered communication?
How technology has altered communication?
*International Therapy Services* is inviting you to a scheduled Zoom meeting.

*Topic:* How to build eye contact and compliance in child

*Time:* Aug 29, 2021 03:00 PM Asia/Karachi

Join Zoom Meeting
https://us04web.zoom.us/j/74906922406?pwd=eXk2WWdiV2xPT1YvWHBIR0M2UWJXdz09

Meeting ID: 749 0692 2406
Passcode: D5c0zk
ہماری فیس بک آئی ڈی اور سے متعلقہ پیج اور گروپ ہیک ہو چکے ہیں . ہماری ٹیم کام کر رہی ہے. جلد ہی مثبت نتائج ملیں گے.
پیج اور گروپ ممبران سے گزارش ہے کہ یہ پیج جوائن کر لیں.
شکریہ

https://www.facebook.com/AdvanceSpeechTherapy/
AoA
Available male Physiotherapist in Johar Town Lahore
WhatsApp:03218766068
any speech therapist at Bahawalpur ????
I want PLS-5 for my child speech at home. Any one plz give me a favor and share with me
A special educator and speech therapist required for 9 years old Boy( preferred home session) NorthNazimabad ..no commentplz just inbox
WE ARE LOOKING FOR DISTRIBUTORS WORLDWIDE.
Great investment opportunity as the tool is very unique.
https://youtu.be/5IIsZwEHiGY

Contact us: [email protected]
WE ARE LOOKING FOR DISTRIBUTORS WORLWIDE.
Great investment opportunity as the tool is very unique.
https://youtu.be/5IIsZwEHiGY
Contact us: [email protected]

Advance Speech Therapy Services

Operating as usual

07/05/2022

جن کی مائیں حیات ہیں اللہ پاک انکو لمبی زندگی عطا فرمائیں. اور جو رخصت ہو گئی ہیں ان کو جنت الفردوس میں جگہ عطا فرمائیں.
آمین


Advance Speech Therapy Services Pakistan 🇵🇰
Nisar Hospital, Peshawar Road, Rawalpindi
03345322674

02/05/2022

May the blessings of Allah fill your life with happiness and open all the doors of success now and always.


Advance Speech Therapy Services Pakistan 🇵🇰

28/04/2022

کیا ہے؟

اور یہ کن بچوں کو دی جاتی ہے؟

تمام طلباء کو اساتذہ کی طرف سے توجہ اور مدد کی ضرورت پڑتی ہے۔ لیکن کچھ ایسے خاص بچے ہوتے ہیں جب کو معمول سے بڑھ کر توجہ اور مدد کی ضرورت ہوتی ہے۔
یہ ایسے بچے ہیں جن کی خاص ضروریات ہوتی ہیں ،

جنہیں معمو ل کی ہدایات اور جائزہ کے ذرائع سے پورا نہیں کیا جا سکتا۔ اُنہیں استاد سے لے کر، کلاس کے عام بچوں سے بڑھ کر مدد کی ضرورت ہوتی ہے۔

خصوصی توجہ کے طالب بچوں کو پڑھانا نہ صرف اساتذہ بلکہ والدین کے لیے بہت بڑا چیلنج ہے۔ کوئی بھی والدین یہ بات سننے کو تیار نہیں ہوتے کہ ان کے بچے کو کوئی خاص ضروریات ہیں یا وہ ذہنی معذور ہیں۔ان کا دل اس بات سے پہلے ہی ٹوٹا ہوتا ہے، یہ عام طور پر اساتذہ کا ہی کام ہے کہ وہ اس صورتِ حال کو نہ صرف جسمانی بلکہ نفسیاتی طور پر بھی دیکھیں، اور انہیں سمجھائیں کہ ان کے بچے محفوظ ہاتھوں میں ہیں اور ان کی مکمل دیکھ بھال کی جا رہی ہے۔

تحقیق، تعلیم اور ٹیکنالوجی کی ترقی نے ایسے بچوں کو سنبھالنا نسبتاً آسان بنا دیا ہے۔ آج کے اساتذہ اس بات سے پوری طرح آگاہ ہیں کہ کس قسم کہ معذوری میں بچے کو کس قسم کی توجہ کی ضرورت ہوتی ہے۔ لیکن اس کا ہرگز یہ مطلب نہیں اب یہ کام نہائت آسانی سے ہو جاتا ہے، یہ اب بھی کافی مشکل ہے، کیونکہ خصوصی بچے اپنے لیے اضافی وقت اور توجہ کا تقاضہ کر یں گے اور آپ کو بہت ذیادہ برداشت کا مظاہرہ کرنا پڑے گا،

ایسے بچوں کو پڑھانے کے لیے خصوصی حکمتِ عملی اور ماحول کی ضرورت ہے، جو ایسے بچوں کے لیے سازگار ہو اور ان کی تعلم کی صلاحیت کو بڑھا سکے۔ یہاں یہ بات اہم ہے کہ یہ خصوصی بچے ایسے طلباء نہیں ہیں جو کہ سیکھ سکنے ک صلاحیت نہیں رکھتے، فرق صرف یہ ہے کہ ان کی خاص تعلمی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے خاص #اندازِ_تدریس اپنانا پڑتا ہے جو کہ ان کی غیر معمولی تعلمی صلاحیتوں کے مطابق ہو۔

ایسے بچے کے لیے کوئی بھی حکمتِ عملی اپنانے سے قبل یہ ضروری ہے کہ استاد اس بات سے واقف ہو کہ بچہ کس قسم کے مسائل کا شکار ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ استاد کے لیے لازم ہے کہ وہ بچوں کے مسائل اور ان مسائل سے جڑے خاص ضروریات سے مکمل واقفیت رکھتا ہو۔

⬅️ خصوصی بچوں میں پائی جانے والے مسائل کی اقسام:

درج ذیل میں خصوصی تعلیم کے سکول میں بچوں میں پائے جانے والے چند مسائل کی فہرست دی گئی ہے؛

⬅️ آٹزم، ڈاؤن سنڈروم، اے ڈی ایچ ڈی، مائکرو سفیلک

⬅️ بہرہ پن۔ اندھا پن

⬅️ بہرہ پن

⬅️ جذباتی پریشانی

⬅️ سماعت کا نقص

⬅️ ذہنی معذوری / ذہانت کے مسائل

⬅️ مخصوص تعلمی مسائل

⬅️ ہڈیوں کا نقص

⬅️ بولنے یا زبان کا نقص

⬅️ شدید دماغی چوٹ

⬅️ بینائی کا نقص

⬅️ ایک سے ذائد معذوریاں

⬅️ صحت کے دوسرے مسائل

⬅️ سبق یاد کرنے کے مسائل

وہ بچے جو درج ذیل مسائل کے ساتھ ہیں ان کا بھی تعلیم پر پورا حق ہے. ہمارے خصوصی تعلیم کے اساتذہ ان بچوں کی تعلیمی ضروریات پورا کرنے کے لیے دن رات کوشاں ہیں. اگر آپ ہمارے اساتذہ کی خدمات حاصل کرنا چاہتے ہیں تو آج ہی دئیے گئے نمبر پر رابطہ کریں.

نوٹ : ہمارے اساتذہ ویسٹریج، ڈھوک حسو اور نثار ہسپتال راولپنڈی میں اپنی خدمات سرانجام دیں گے. ہوم سیشنز کی سہولت بھی راولپنڈی کے گردونواح میں مہیا کی جائے گی.
شکریہ


Nisar Hospital, Peshawar Road, Rawalpindi
03345322674

23/04/2022

کل رات آرٹیکل پڑھنے کے بعد بہت سے اساتذہ مجھ سے رابطہ کر رہے ہیں. اور زیادہ تو کا یہی سوال ہے کہ کمرہ جماعت میں بچوں کے رویے کو بہتر کرنے کے لئے کیا کیا جائے؟

ّیوں_کو

وہ زمانے گئے جب اساتذہ بچوں کو مارا پیٹا کرتے تھے۔ اب والدین کا مطمح نظر یہ ہے کہ ان کے بچوں کو خراش تک نہیں آنی چاہئے اور بچے کو سزا دینا تو کجا، ڈانٹنے کا اختیا ربھی استاد کو حاصل نہیں ہے۔

اب سوال یہ پیدا ہوتاہے کہ اگر بچہ جارحانہ اور پرتشدد مزاج کا حامل ہے اور ضرورت سے زیادہ غصہ کرتا ہے تو اسے عدم تشدد کی راہ پر کیسے ڈالا جائے اور اس کے رویّے کو کیسے بہتر کیا جائے، جس سے نہ تو اس کی شخصیت متا ثر ہو اور نہ ہی اس کے ہم جماعتوں کو کسی قسم کا نقصان پہنچے۔

روایت کی عینک سے دیکھا جائے تو بچوں کی بہتری کو استاد کی مار سے تعبیر کیا جاتا ہے، لیکن اہل مغرب نے اس تصور کو یکسر بدل کرکے رکھ دیا ہے جو کہ بالکل درست ہے ۔ ان کے نقطۂ نظر کے مطابق بچے کی ذہنی اور جسمانی نشوونما کیلئے ڈرانے یا دھمکانے کے بجائے بچوں کو خود کچھ کرنے دیا جائے۔ یہی وجہ ہے کہ بہت سے مغربی ممالک میں اسکولوں میں یا گھر میں بچوں کی پٹائی کو جرم قرار دیا گیاہے اور اس کی خلاف ورزی کی صورت میں متعلقہ شخص کو سزا ہوسکتی ہے۔

ہمارے ملک میں سرکاری اور غیر سرکاری اسکولوں کے علاوہ مدراس میں بھی اساتذہ کے ہاتھوں بچوں کی پٹائی کی خبریں آتی رہتی ہیں، جسے روایتی میڈیا کے ساتھ سوشل میڈیا پر بھی خوب آڑے ہاتھوں لیا جاتاہے ۔

اس ضمن میں ماہرین نفسیات کہتے ہیں کہ بچوں پر کیے گئے تشدد کا اثر فوری طور پر نظر نہ بھی آئے مگر بعد میں جاکر اس کے اثرات نظر آنا شروع ہوجاتے ہیں۔ سوال یہ ہے کہ اسکولوں میں اور خاص طورپر کلاس روم میں بی بیہیویئر مینجمنٹ یعنی بچوں کے روّیوں کو کیسے منظم کیا جائے؟

⬅️اساتذہ کا کردار

بچوں کے روّیوں کو منظم کرنا اساتذہ کے ہاتھ میں ہوتا ہے۔ انہیں کمرہ جماعت کو اپنی فہم و دانشمندی کے ساتھ کچھ اس طرح کنٹرول کرنا ہوتا ہے کہ بچوں کی عزّتِ نفس متاثر نہ ہو۔ ایک بات کہی جاتی ہے کہ اچھے استاد کے ہاتھ میں عام کتاب بھی خاص بن جاتی ہے اور اچھے استاد کے بغیرخاص کتاب بھی عام بن جاتی ہے۔ یہی حال بچوں کابھی ہے، ایک اچھا استاد ہر بچے کے ساتھ اس کے مزاج کے مطابق سلوک رکھے تو نتائج بہتر آتے ہیں۔عزت نفس کے ساتھ ساتھ نظم و ضبط اور حوصلہ افزائی استاد کو بگڑی ہوئی کلاس پر قابو پانے کے قابل بناتی ہے۔

ا س سلسلے میں تعلیمی سال کے آغا زپر ہی اساتذہ کو ایسی تدابیر اپنا لینی چاہئیں، جس سے کمرہ جماعت کے ماحول پر خوشگوار اثر پڑے اور جسمانی سزا کے مواقع کم سے کم پیدا ہوں۔ بعض اساتذہ شرارتی بچوں کیلئے الگ حکمت عملی اپناتے ہیں جبکہ کچھ شرارتی بچوں سے ہی قوانین بنوالیتے ہیں لیکن معاملہ فہم اور زیرک اساتذہ کمرہ جماعت کے ماحول کو باہمی میل جو ل اور عزت واحترام کے اصول پر لے آتے ہیں ، جس سے اساتذہ اور طلبا کے درمیان ایک ضابطہ اخلاق طے ہو جاتاہے۔

اس طرح مشاورت، تبادلہ خیال اور ٹیم ورک کے ذریعے مسائل پر قابو پانے کی راہ ہموار ہوجاتی ہے۔حوصلہ افزائی و ترغیب حوصلہ افزائی اور ترغیب کی تکنیک اپنا لی جائے تو بچوں کے روّیوں کو کنٹرول کرنے کیلئے کوئی خاص سعی نہیں کرنی پڑتی اور جارحانہ مزاج بچے بھی اچھا روّیہ اپنانے کی جانب مائل ہونے لگتے ہیں۔

عزت نفس کے ساتھ ساتھ نظم وضبط کی پابندی بھی بی ہیہیوئر مینجمنٹ میں اہم کردار اداکرتی ہے۔ اگر طالب علم اپنا دیا گیا اسائنمنٹ وقت پر مکمل نہیں کرپاتا تو اسے پوری کلاس کے سامنے ڈانٹنے ڈپٹنے یا درست روّیہ اپنانے کے بجائے اس سے اسائنمنٹ نہ کرنے کی وجہ پوچھی جائے اور اس وجہ کو دور کرنے میں اگر استاد اپنا کردار ادا کرسکتاہے تو اسے ضرور کرنا چاہیے۔ اسائنمنٹ نہ کرنے کی وجہ اگر طالب علم کے گھریلو مسائل ہیں تو اس کے والدین کےساتھ مل کر کوئی صورت نکالی جائے تا کہ طالب علم آئندہ وقت پر اپنا اسائنمنٹ جمع کروائے۔

اسی طرح کلاس کے کم فہم بچوں کے اسائنمنٹس پر خود استاد کو خصوصی توجہ دینی چاہئے اور انہیں ترغیب دینی چاہئے کہ وہ یہ کام اپنے بل بوتے پر کرسکتے ہیں اور بروقت اسائنمنٹ مکمل کرنے پر انہیں انعام بھی دیا جائے گا۔ کسی شرارتی یا جارحانہ مزاج بچے کے رویے کو کنٹرول کرنے میں حوصلہ افزائی اور ترغیب کی تکنیک کافی کارگر ثابت ہوتی ہے۔

⬅️جارحانہ مزاج بچوں کو منظم کرنے کے مشورے

ان کے ساتھ فوراً بات چیت شروع کرکے انہیں ہدایات دینا شروع کریں کہ اپنے بیگ چیک کروائیں۔ درست طریقےسے بیٹھنے کی تاکید کریں اور ان کی توجہ اپنی جانب مرکوز رکھنے کو کہیں۔

⬅️ کائونٹ ڈائون کا طریقہ اپنائیں

بچوں کو کہیں کہ میں 10تک گنوں گا/ گی جب تک اپنا کام مکمل کرلیں یا اپنی بات چیت ختم کریں۔

⬅️جادوئی اثر رکھنے والے الفاظ

جیسے شکریہ (تھینک یو)، مہربانی (پلیز) وغیر ہ استعمال کرکے بچوں کے کام مکمل کروائیں ۔

⬅️ طلبا کو تحفظ کا احسا س دلائیں کہ وہ آپ کے بغیر کس پریشانی میں مبتلا ہو سکتے ہیں۔انہیں ہدایت دی جائے کہ کلاس میں یا کلاس سے باہر کسی بھی سرگرمی کے دوران ہونے والے واقعات وہ فوراً اساتذہ کے علم میں لائیں ۔

⬅️ مختلف سرگرمیوں کیلئے بچوں کی ڈیوٹیز لگائی جائیں، جیسے چھٹی کے وقت والدین سے کارڈ وصول کرکے متعلقہ کلاس سے بچے کو لے کر آنا وغیرہ ۔

جب استاد بچے پر ذمہ داری عائد کرتا ہے تو بچے میں احساس ذمہ داری پیدا ہوتی ہے اور وہ خود اس ذمہ داری کو پورا کرنے کی کوشش کرتا ہے.

اس کے برعکس اگر بچے پر کوئی ذمہ داری نا عائد کی جائے. گھر میں سب کام والدین کریں اور سکول میں بھی اس طرح کی سرگرمیاں نہ کرائی جائیں تو بچے میں غیرذمہ داری کا احساس ہی جنم لے گا. اور یہی غیر ذمہ داری آگے چل کے مزید مسائل کی وجہ بنتی ہے.

بچوں پر چھوٹی عمر سے ہی چھوٹی چھوٹی ذمہ داریاں عائد کریں. کھیل کھیل میں مختلف سرگرمیوں کی شکل میں ان سے مختلف ٹاسک مکمل کرائیں. کھیلوں کے اصول بنائیں اور بچوں کو ترغیب دیں کہ وہ ان اصولوں کو فالو کریں.

اگر پھر بھی والدین اور اساتذہ کو لگے کہ بچہ مینج نہیں ہو رہا تو براہ مہربانی دیگر ماہرین، ماہر نفسیات، بیہیوئر تھراپسٹ سے رابطہ کریں اورانکی خدمات حاصل کریں.

بچوں کے مسائل کے متعلق مزید معلومات کے لیے ہمارے کلینک کے نمبر پر رابطہ کریں.
شکریہ

Advance Speech Therapy Services Pakistan 🇵🇰
Advanced Rehabilitation Services
Nisar Hospital, Peshawar Road, Rawalpindi
03345322674

Videos (show all)

Eid-ul-Adha 2021
Eid-ul-Adha 2021
Receptive Language & Expressive Language
Speech Therapy Services 🇵🇰
Beautiful Journey of #hijab_zahra_syed
Advance Speech Therapy Services 🇵🇰
Voice Surgery
Preschool Language Scale
#Five #Tongue #Exercises that you can do to get clear #Speech
Happy Independence Day🇵🇰

Location

Telephone

Address


Rawalpindi
4545

Other Speech Pathologists in Rawalpindi (show all)
Hearing Aids Pakistan Hearing Aids Pakistan
UG-65 Rania Mall Bank Road Saddar
Rawalpindi, 46000

We are the leading Pakistan innovative hearing solutions. We are pioneer for equal opportunities and improved quality of life for people with hearing impairments in Pakistan. The Hearing Matters is the leading family company in hearing aids.

Learn Through Play at Medel speech centre Learn Through Play at Medel speech centre
House#34, Lane#2, Army Officers Housing Colony, Morgah
Rawalpindi, 44000

This page is basically created, while keeping in view the needs of parents whose children are with

Child Centered Teletherapy Services Child Centered Teletherapy Services
Rawalpindi

The Child Centered Teletherapy Services is now providing speech & language services via teletherapy and in person both. We have certified speech-language pathologists on board. services are available to national and international clients.

Speech & Language Therapy Clinic Speech & Language Therapy Clinic
Railway Scheme 1, Chaklala
Rawalpindi, 46000

We are a private practice offering speech and language therapy to children who exhibit delays in their communication skills. Speech and language therapy is concerned with the management of disorders of speech, language, communication and swallowing.

Speech and language therapist / psychologist/ Special Educator Speech and language therapist / psychologist/ Special Educator
Online Special Education Services
Rawalpindi, 46000

Deal online with problems as Difficulty in producing speech In understanding or using language Hearing, physically impaired,intellectually chalanged

SFRC SFRC
76-B, Street 5, Harley Street,
Rawalpindi, 46000

Providing quality Speech and Language Therapy services to Rawalpindi and Islamabad region.Holistic assessment, management&treatment of speech difficulties