Ajmal Tibbia College Rawalpindi. 0321-5899587

Ajmal Tibbia College Rawalpindi. 0321-5899587

Comments

Sir i want renew my registration plz help
Bilateral varicocele hydrocele Ka illaj hikmat mein batain thanks
خوشخبری

طبی ڈیجیٹل لائبریری

السلام علیکم!

آج طب اور اہل طب کے ساتھ جو مسائل ہیں ان میں سے ایک اہم مسئلہ یہ بھی ہے کہ طب کا علمی مواد(طبی کتب ،رسائل اور مضامین وغیرہ) کسی ایسے پلیٹ فارم پر موجود نہیں جس سے ہر ایک طبیب استفادہ کر سکے۔ البتہ انفرادی طور پر بعض اطباء کے پاس بہترین طبی کتب و رسائل ہوں گے۔

اس کمی کو پورا کرنے کیلئے اولین کوشش:

ہماری جو طبی کتب PDF فارمیٹ پر موجود ہیں ان کو مضامین کی مناسبت سے کٹیگری بنا کر طبی ڈیجیٹل لائبریری کی شکل دی جا رہی ہے، جس میں کچھ کتابیں ایڈ بھی کی جا چکی ہیں۔

التماس
اگر آپ کے پاس یا آپ کے کسی بھی جاننے والے کے پاس طبی کتب، رسائل یا مضامین PDF فائل کی شکل میں ہوں یا کسی بھی دوسرے فارمیٹ پر ہوں تو درج ذیل واٹس ایپ نمبر یا ای میل پر سینڈ فرمائیں۔
0345-0510411
[email protected]

ان شاء اللہ آپ کا یہ تعاون ہم سب کیلئے اور ہماری آئندہ نسلوں تک طبی علوم کے رشتہ کو جوڑے رکھے گا۔اور استفادہ کا موقع فراہم کرتا رہے گا۔

آپ کی آسانی اور معلومات کیلئے طبی ڈیجیٹل لائبریری کی کٹیگریز پیش خدمت ہیں:
1-تاریخ طب
2-حفظان صحت
3-اصول طب (کلیات)
4-علم التشریح (اناٹومی)
5-علم وظائف الابدان (فزیالوجی)
6-علم الادویہ (مفردات و مرکبات)
7-دوا سازی
8-معالجات
9-قرابا دینی (طبی فارما کوپیا)
10-ماہیت الامراض (پیتھالوجی)
11-امراض متعدیہ وبائیہ
12-علم القابلہ (مڈوائفری)
13۔امراض مرداں
14-امراض نسواں
15-امراض اطفال
16-علم التشخیص
17-مطب و نسخہ نویسی
18-علم الجراحت (سرجری)
19-نفسیات (سائیکا لوجی)
20-علم السموم
21-حمیات
22-طب قانونی
23-علم النبض
24۔کتب امراض متفرقہ
25-کتب نظریہ مفرد اعضاء ثلاثہ
26۔کتب نظریہ مفرد اعضاء اربعہ
27-طبی رسائل
28-طبی مضامین

الداعی الی الخیر:
ضیاءالرحمن ستی
Iftikhar hussain
Asalam o Alikum. Im a qualified (registered and license holder) Hakeem (Herbal Physician) and Hijama Specialist from Rawalpindi. With the knowledge from my forefathers and complete qualification from Ajmal Tibbia College, I have treated many chronic diseases of RHEUMATOID-ARTHRITIS , OBESITY , PILES , HYPERACIDITY, Liver, Stomach, Joints and Back Pain, Lungs (asthma and all coughs), TB, Urinary Issues, Kidney Problems, Infants (Newly born) Diseases, Jaundice, Heart Problems, Sugar (Diabetes), Hernia (Rasoli and Swellings), Extra Body Fat and Bulkiness, Personal Diseases (Private Male and Female Problems) and many other diseases with Natural Herbal Medicines and Hijama without any Side Effect.
There are no consultancy Charges.

Im available at my clinic on Saturday and Sunday at my Dawakhana (Clinic) in Pindi near Kartarpura.
Appointment should be taken on Phone call on my Personal number I have shared below. Insha'Allah you will be benefited with the way of Treatment.

Serving Mankind is a virtue. Good health is a gift from Allah and He knows best. I guarantee satisfactory Treatment and its Results from "Herbal Medicines and Hijama" without any side effects and also I will be very thankful for the response from the patients.

Feel free to contact. Patients can contact anytime on my cell phone number and can come to the given address on Saturday and Sunday.
Please Share with others. Thank You

Hakeem Aamir Khan Ambalvi
Contact: 03005811803
Address: Near Usmania Masjid, House No p-1432, Mohala Haripura, Kartarpura Ghazi Road, Rawalpindi

Ajmal Tibbia College , Rawalpindi, Pakistan. Cell:0334-7142128.
0333AJMAL51
0300-8842040
Web site: www.atcr.edu.pk
E-mail: [email protected]

Ajmal Tibbia College Rawalpindi © 1893-2021

Ajmal Tibbia College Rawalpindi Established in 1893.
بسم اللہ الرحمن الرحیم۔
نوٹس داخلہ
خدمت عبادت روزگار
(قدیم ترین اور بہترین)
طب کی قدیم ترین طبی درسگاہ اجمل طبیہ کالج راولپنڈی قائم شدہ 1893 ، میں میٹرک سائنس پاس طلباء و طالبات سے قومی طبی کونسل، وزارت صحت، حکومت پاکستان سے منظور شدہ اور
پنجاب ہیلتھ کیئر ،
کےپی کے ہیلتھ کیئر ،
سندھ ہیلتھ کئیر کمشن
اسلام آباد ہیلتھ
اور آذاد ح

Operating as usual

Photos from Ajmal Tibbia College Rawalpindi. 0321-5899587's post 05/10/2021

Inspection of Ajmal Tibbia College by Inspection and Education Committee of NCT lead by Hk Abdul Wahid, Hk Zia Ullah and Hk Farid Yonus on Oct 05, 2021 Welcomed by Prof. Hk Imran Lodhi, Hk Mir Wase Khan, Hk Amin Baig Member NCT, Hk Ghazanfar Ali, Usman Ul Haq Lodhi and Abdul Burr.

19/09/2021

بسم اللہ الرحمن الرحیم۔
نوٹس داخلہ
خدمت عبادت روزگار
(قدیم ترین اور بہترین)
طب کی قدیم ترین طبی درسگاہ اجمل طبیہ کالج راولپنڈی قائم شدہ 1893 ، میں میٹرک سائنس پاس طلباء و طالبات سے قومی طبی کونسل، وزارت صحت، حکومت پاکستان سے منظور شدہ اور
پنجاب ہیلتھ کیئر ،
کےپی کے ہیلتھ کیئر ،
سندھ ہیلتھ کئیر کمشن،
اسلام آباد ہیلتھ ریگولیٹری
اور آذاد حکومت جموں و کشمیر سے تسلیم شدہ چار سالہ کورس
"فاضل الطب و الجراحت"
میں مجوزہ داخلہ فارم پر درخواستیں مطلوب ہیں۔

درخواست کے ہمراہ 6 عدد میٹرک کی کاپیاں۔
2 عدد قومی شناختی کارڈ کی کاپی اور
6 عدد پاسپورٹ سائز تصاویر آویزاں کریں۔

پاکستان کا پہلا اور واحد أن لائن طبیہ کالج.
آن لائن داخلہ فارم پر کرنے کے لیے لنک پر کلک کریں۔
فارم پر کرنے سے قبل اپنی ایک عدد تصویر اور ایک عدد میٹرک کی سند / مارک شیٹ کی صاف سکین کاپی یا تصویر ہمراہ رکھیں۔
https://docs.google.com/forms/d/1M9VZoJFe_GFIKlCF00AVZUOim_Mc50_zgY3JgtTKZXA/edit

مزید معلومات کے لیے 5899587-0321
0334-7142128 پر رابطہ کریں۔
یا واٹس ایپ/میسنجر نمبر
0321-5899587
پر Info لکھ کر سینڈ کریں اور چند سیکنڈ انتظار کریں آپکو مطلوبہ معلومات مل جائیں گی۔
نوٹ: بعض اوقات انٹرنیٹ یا سگنل کی خرابی یا سپیڈ میں کمی کی وجہ سے جواب میں تاخیر ہوسکتی ہے۔ اس صورت میں چند منٹ بعد دوبارہ Info لکھیں۔
پروفیسر حکیم عمران لودھی۔
پرنسپل اجمل طبیہ کالج، راولپنڈی۔
مزید معلومات کے لیے لنک کلک کریں
www.fb.com/atcpak
اس معلومات کو دوستوں میں شئیر کریں۔ جزاک اللہ۔
پرنسپل اجمل طبیہ کالج۔
144 نیو ملپور۔ سیونتھ روڈ، بلقابل مسجد دادن خان۔ راولپنڈی۔
Ajmal Tibbia College.
144 New Mulpur.
7th Road.
Opposite Masjid Dadan Khan.
Rawalpindi.
https://maps.app.goo.gl/Cwg1Uu9b3jSbUdvk6

بسم اللہ الرحمن الرحیم۔
نوٹس داخلہ
خدمت عبادت روزگار
(قدیم ترین اور بہترین)
طب کی قدیم ترین طبی درسگاہ اجمل طبیہ کالج راولپنڈی قائم شدہ 1893 ، میں میٹرک سائنس پاس طلباء و طالبات سے قومی طبی کونسل، وزارت صحت، حکومت پاکستان سے منظور شدہ اور
پنجاب ہیلتھ کیئر ،
کےپی کے ہیلتھ کیئر ،
سندھ ہیلتھ کئیر کمشن،
اسلام آباد ہیلتھ ریگولیٹری
اور آذاد حکومت جموں و کشمیر سے تسلیم شدہ چار سالہ کورس
"فاضل الطب و الجراحت"
میں مجوزہ داخلہ فارم پر درخواستیں مطلوب ہیں۔

درخواست کے ہمراہ 6 عدد میٹرک کی کاپیاں۔
2 عدد قومی شناختی کارڈ کی کاپی اور
6 عدد پاسپورٹ سائز تصاویر آویزاں کریں۔

پاکستان کا پہلا اور واحد أن لائن طبیہ کالج.
آن لائن داخلہ فارم پر کرنے کے لیے لنک پر کلک کریں۔
فارم پر کرنے سے قبل اپنی ایک عدد تصویر اور ایک عدد میٹرک کی سند / مارک شیٹ کی صاف سکین کاپی یا تصویر ہمراہ رکھیں۔
https://docs.google.com/forms/d/1M9VZoJFe_GFIKlCF00AVZUOim_Mc50_zgY3JgtTKZXA/edit

مزید معلومات کے لیے 5899587-0321
0334-7142128 پر رابطہ کریں۔
یا واٹس ایپ/میسنجر نمبر
0321-5899587
پر Info لکھ کر سینڈ کریں اور چند سیکنڈ انتظار کریں آپکو مطلوبہ معلومات مل جائیں گی۔
نوٹ: بعض اوقات انٹرنیٹ یا سگنل کی خرابی یا سپیڈ میں کمی کی وجہ سے جواب میں تاخیر ہوسکتی ہے۔ اس صورت میں چند منٹ بعد دوبارہ Info لکھیں۔
پروفیسر حکیم عمران لودھی۔
پرنسپل اجمل طبیہ کالج، راولپنڈی۔
مزید معلومات کے لیے لنک کلک کریں
www.fb.com/atcpak
اس معلومات کو دوستوں میں شئیر کریں۔ جزاک اللہ۔
پرنسپل اجمل طبیہ کالج۔
144 نیو ملپور۔ سیونتھ روڈ، بلقابل مسجد دادن خان۔ راولپنڈی۔
Ajmal Tibbia College.
144 New Mulpur.
7th Road.
Opposite Masjid Dadan Khan.
Rawalpindi.
https://maps.app.goo.gl/Cwg1Uu9b3jSbUdvk6

17/07/2021

بسم اللہ الرحمن الرحیم۔
نوٹس داخلہ
خدمت عبادت روزگار
(قدیم ترین اور بہترین)
طب کی قدیم ترین طبی درسگاہ اجمل طبیہ کالج راولپنڈی قائم شدہ 1893 ، میں میٹرک سائنس پاس طلباء و طالبات سے قومی طبی کونسل، وزارت صحت، حکومت پاکستان سے منظور شدہ اور
پنجاب ہیلتھ کیئر ،
کےپی کے ہیلتھ کیئر ،
سندھ ہیلتھ کئیر کمشن
اور آذاد حکومت جموں و کشمیر سے تسلیم شدہ چار سالہ کورس
"فاضل الطب و الجراحت"
میں مجوزہ داخلہ فارم پر درخواستیں مطلوب ہیں۔
درخواست کے ہمراہ 6 عدد میٹرک کی کاپیاں۔
2 عدد قومی شناختی کارڈ کی کاپی اور
6 عدد پاسپورٹ سائز تصاویر آویزاں کریں۔
پاکستان کا پہلا اور واحد أن لائن طبیہ کالج.
آن لائن داخلہ فارم پر کرنے کے لیے لنک پر کلک کریں۔
فارم پر کرنے سے قبل اپنی ایک عدد تصویر اور ایک عدد میٹرک کی سند / مارک شیٹ کی صاف سکین کاپی یا تصویر ہمراہ رکھیں۔
https://docs.google.com/forms/d/1M9VZoJFe_GFIKlCF00AVZUOim_Mc50_zgY3JgtTKZXA/edit

مزید معلومات کے لیے 5899587-0321
0334-7142128 پر رابطہ کریں۔
یا واٹس ایپ/میسنجر نمبر
0321-5899587
پر Admission لکھ کر سینڈ کریں اور چند سیکنڈ انتظار کریں آپکو مطلوبہ معلومات مل جائیں گی۔
نوٹ: بعض اوقات انٹرنیٹ یا سگنل کی خرابی یا سپیڈ میں کمی کی وجہ سے جواب میں تاخیر ہوسکتی ہے۔ اس صورت میں چند منٹ بعد دوبارہ admission لکھیں۔
پروفیسر حکیم عمران لودھی۔
پرنسپل اجمل طبیہ کالج، راولپنڈی۔
مزید معلومات کے لیے لنک کلک کریں
www.fb.com/atcpak
اس معلومات کو دوستوں میں شئیر کریں۔ جزاک اللہ۔

بسم اللہ الرحمن الرحیم۔
نوٹس داخلہ
خدمت عبادت روزگار
(قدیم ترین اور بہترین)
طب کی قدیم ترین طبی درسگاہ اجمل طبیہ کالج راولپنڈی قائم شدہ 1893 ، میں میٹرک سائنس پاس طلباء و طالبات سے قومی طبی کونسل، وزارت صحت، حکومت پاکستان سے منظور شدہ اور
پنجاب ہیلتھ کیئر ،
کےپی کے ہیلتھ کیئر ،
سندھ ہیلتھ کئیر کمشن
اور آذاد حکومت جموں و کشمیر سے تسلیم شدہ چار سالہ کورس
"فاضل الطب و الجراحت"
میں مجوزہ داخلہ فارم پر درخواستیں مطلوب ہیں۔
درخواست کے ہمراہ 6 عدد میٹرک کی کاپیاں۔
2 عدد قومی شناختی کارڈ کی کاپی اور
6 عدد پاسپورٹ سائز تصاویر آویزاں کریں۔
پاکستان کا پہلا اور واحد أن لائن طبیہ کالج.
آن لائن داخلہ فارم پر کرنے کے لیے لنک پر کلک کریں۔
فارم پر کرنے سے قبل اپنی ایک عدد تصویر اور ایک عدد میٹرک کی سند / مارک شیٹ کی صاف سکین کاپی یا تصویر ہمراہ رکھیں۔
https://docs.google.com/forms/d/1M9VZoJFe_GFIKlCF00AVZUOim_Mc50_zgY3JgtTKZXA/edit

مزید معلومات کے لیے 5899587-0321
0334-7142128 پر رابطہ کریں۔
یا واٹس ایپ/میسنجر نمبر
0321-5899587
پر Admission لکھ کر سینڈ کریں اور چند سیکنڈ انتظار کریں آپکو مطلوبہ معلومات مل جائیں گی۔
نوٹ: بعض اوقات انٹرنیٹ یا سگنل کی خرابی یا سپیڈ میں کمی کی وجہ سے جواب میں تاخیر ہوسکتی ہے۔ اس صورت میں چند منٹ بعد دوبارہ admission لکھیں۔
پروفیسر حکیم عمران لودھی۔
پرنسپل اجمل طبیہ کالج، راولپنڈی۔
مزید معلومات کے لیے لنک کلک کریں
www.fb.com/atcpak
اس معلومات کو دوستوں میں شئیر کریں۔ جزاک اللہ۔

[07/17/21]   Ajmal Tibbia College.
144 New Mulpur.
7th Road.
Opposite Masjid Dadan Khan.
Rawalpindi.
https://maps.app.goo.gl/Cwg1Uu9b3jSbUdvk6

29/12/2020

مسیح الملک حکیم اجمل خان۔
11 Feb 1868- 29 Dec 1927.
With thanks Ajmal khan Society.

مسیح الملک حکیم اجمل خان۔
11 Feb 1868- 29 Dec 1927.
With thanks Ajmal khan Society.

Ajmal Tibbia College اجمل طبیہ کالج۔ 29/11/2020

Ajmal Tibbia College اجمل طبیہ کالج۔

Press Link for Address
https://maps.app.goo.gl/Cwg1Uu9b3jSbUdvk6

Ajmal Tibbia College اجمل طبیہ کالج۔ ★★★★★ · Medical school · New Mulpur, 7th Rd, opposite Masjid Dadan Khan

24/10/2020

محترم حکیم خواجہ رضوان احمد، سابق پرنسپل طبیہ کالج سلہٹ اور محترم حکیم احسان الحق خان لودھی، سابق پرنسپل اجمل طبیہ کالج راولپنڈی کی ایک یادگار اور نایاب تصویر۔

محترم حکیم خواجہ رضوان احمد، سابق پرنسپل طبیہ کالج سلہٹ اور محترم حکیم احسان الحق خان لودھی، سابق پرنسپل اجمل طبیہ کالج راولپنڈی کی ایک یادگار اور نایاب تصویر۔

16/10/2020

اجمل طبیہ کالج راولپنڈی۔
1893ء سے آج تک بطور پرنسپل خدمات سرانجام دینے والی شخصیات۔

اجمل طبیہ کالج راولپنڈی۔
1893ء سے آج تک بطور پرنسپل خدمات سرانجام دینے والی شخصیات۔

[10/12/20]   ﷽اَلسَلامُ عَلَيْكُم وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ‎
اگر آپ اجمل طبیہ کالج میں داخلہ کے بارے میں واٹس ایپ پر معلومات حاصل کرنا چاہتے ہیں تو نیچے دیے گئے لنک پر کلک کریں
mywa.link/pfkgoxsa
کلک کرنے کے بعد ہدایات پڑھیں اور ان پر عمل کریں، آپ کی مطلوبہ معلومات مل جائے گی۔

Photos from Ajmal Tibbia College Rawalpindi. 0321-5899587's post 14/08/2020

Happy 73rd Independence Day. 1947-2020.
پاکستان زندہ باد
Today is a big day for Ajmal Tibbia College, We got a big achievement, A mile Stone.

12/07/2020

بسم اللہ الرحمن الرحیم۔
نوٹس داخلہ
خدمت عبادت روزگار
(قدیم ترین اور بہترین)
طب کی قدیم ترین طبی درسگاہ اجمل طبیہ کالج راولپنڈی قائم شدہ 1893 ، میں میٹرک سائنس پاس طلباء و طالبات سے قومی طبی کونسل، وزارت صحت، حکومت پاکستان سے منظور شدہ اور
پنجاب ہیلتھ کیئر ،
کےپی کے ہیلتھ کیئر ،
سندھ ہیلتھ کئیر کمشن
اور آذاد حکومت جموں و کشمیر سے تسلیم شدہ چار سالہ کورس
"فاضل الطب و الجراحت"
میں مجوزہ داخلہ فارم پر درخواستیں مطلوب ہیں۔
درخواست کے ہمراہ 6 عدد میٹرک کی کاپیاں۔
2 عدد قومی شناختی کارڈ کی کاپی اور
6 عدد پاسپورٹ سائز تصاویر آویزاں کریں۔
پاکستان کا پہلا اور واحد أن لائن طبیہ کالج.
آن لائن داخلہ فارم پر کرنے کے لیے لنک پر کلک کریں۔
فارم پر کرنے سے قبل اپنی ایک عدد تصویر اور ایک عدد میٹرک کی سند / مارک شیٹ کی صاف سکین کاپی یا تصویر ہمراہ رکھیں۔
https://docs.google.com/forms/d/1M9VZoJFe_GFIKlCF00AVZUOim_Mc50_zgY3JgtTKZXA/edit

مزید معلومات کے لیے 5899587-0321
0334-7142128 پر رابطہ کریں۔
یا واٹس ایپ/میسنجر نمبر
0321-5899587
پر Admission لکھ کر سینڈ کریں اور چند سیکنڈ انتظار کریں آپکو مطلوبہ معلومات مل جائیں گی۔
نوٹ: بعض اوقات انٹرنیٹ یا سگنل کی خرابی یا سپیڈ میں کمی کی وجہ سے جواب میں تاخیر ہوسکتی ہے۔ اس صورت میں چند منٹ بعد دوبارہ admission لکھیں۔
پروفیسر حکیم عمران لودھی۔
پرنسپل اجمل طبیہ کالج، راولپنڈی۔
مزید معلومات کے لیے لنک کلک کریں
www.fb.com/atcpak
اس معلومات کو دوستوں میں شئیر کریں۔ جزاک اللہ۔

بسم اللہ الرحمن الرحیم۔
نوٹس داخلہ
خدمت عبادت روزگار
(قدیم ترین اور بہترین)
طب کی قدیم ترین طبی درسگاہ اجمل طبیہ کالج راولپنڈی قائم شدہ 1893 ، میں میٹرک سائنس پاس طلباء و طالبات سے قومی طبی کونسل، وزارت صحت، حکومت پاکستان سے منظور شدہ اور
پنجاب ہیلتھ کیئر ،
کےپی کے ہیلتھ کیئر ،
سندھ ہیلتھ کئیر کمشن
اور آذاد حکومت جموں و کشمیر سے تسلیم شدہ چار سالہ کورس
"فاضل الطب و الجراحت"
میں مجوزہ داخلہ فارم پر درخواستیں مطلوب ہیں۔
درخواست کے ہمراہ 6 عدد میٹرک کی کاپیاں۔
2 عدد قومی شناختی کارڈ کی کاپی اور
6 عدد پاسپورٹ سائز تصاویر آویزاں کریں۔
پاکستان کا پہلا اور واحد أن لائن طبیہ کالج.
آن لائن داخلہ فارم پر کرنے کے لیے لنک پر کلک کریں۔
فارم پر کرنے سے قبل اپنی ایک عدد تصویر اور ایک عدد میٹرک کی سند / مارک شیٹ کی صاف سکین کاپی یا تصویر ہمراہ رکھیں۔
https://docs.google.com/forms/d/1M9VZoJFe_GFIKlCF00AVZUOim_Mc50_zgY3JgtTKZXA/edit

مزید معلومات کے لیے 5899587-0321
0334-7142128 پر رابطہ کریں۔
یا واٹس ایپ/میسنجر نمبر
0321-5899587
پر Admission لکھ کر سینڈ کریں اور چند سیکنڈ انتظار کریں آپکو مطلوبہ معلومات مل جائیں گی۔
نوٹ: بعض اوقات انٹرنیٹ یا سگنل کی خرابی یا سپیڈ میں کمی کی وجہ سے جواب میں تاخیر ہوسکتی ہے۔ اس صورت میں چند منٹ بعد دوبارہ admission لکھیں۔
پروفیسر حکیم عمران لودھی۔
پرنسپل اجمل طبیہ کالج، راولپنڈی۔
مزید معلومات کے لیے لنک کلک کریں
www.fb.com/atcpak
اس معلومات کو دوستوں میں شئیر کریں۔ جزاک اللہ۔

19/06/2020

بسم اللہ الرحمن الرحیم۔
نوٹس داخلہ
خدمت عبادت روزگار
(قدیم ترین اور بہترین)
طب کی قدیم ترین طبی درسگاہ میں میٹرک سائنس پاس طلباء و طالبات سے قومی طبی کونسل، وزارت صحت، حکومت پاکستان سے منظور شدہ اور پنجاب ہیلتھ کیئر ،کےپی کے ہیلتھ کیئر ، سندھ ہیلتھ کئیر کمشن اور آذاد حکومت جموں و کشمیر سے تسلیم شدہ چار سالہ کورس "فاضل طب و جراحت" میں مجوزہ داخلہ فارم پر درخواستیں مطلوب ہیں۔
درخواست کے ہمراہ 6عدد میٹرک کی کاپیاں۔
2 عدد قومی شناختی کارڈ کی کاپی اور
6 عدد پاسپورٹ سائز تصاویر آویزاں کریں۔
آن لائن داخلہ فارم پر کرنے کے لیے لنک پر کلک کریں۔
فارم پر کرنے سے قبل اپنی ایک عدد تصویر اور ایک عدد میٹرک کی سند / مارک شیٹ کی صاف سکین کاپی یا تصویر ہمراہ رکھیں۔
https://docs.google.com/forms/d/1M9VZoJFe_GFIKlCF00AVZUOim_Mc50_zgY3JgtTKZXA/edit

مزید معلومات کے لیے 5899587-0321
0334-7142128 پر رابطہ کریں۔
یا واٹس ایپ نمبر
0321-5899587
پر Admission لکھ کر سینڈ کریں اور چند سیکنڈ انتظار کریں آپکو مطلوبہ معلومات مل جائیں گی۔
پروفیسر حکیم عمران لودھی۔
پرنسپل اجمل طبیہ کالج، راولپنڈی۔
www.fb.com/atcpak

بسم اللہ الرحمن الرحیم۔
نوٹس داخلہ
خدمت عبادت روزگار
(قدیم ترین اور بہترین)
طب کی قدیم ترین طبی درسگاہ میں میٹرک سائنس پاس طلباء و طالبات سے قومی طبی کونسل، وزارت صحت، حکومت پاکستان سے منظور شدہ اور پنجاب ہیلتھ کیئر ،کےپی کے ہیلتھ کیئر ، سندھ ہیلتھ کئیر کمشن اور آذاد حکومت جموں و کشمیر سے تسلیم شدہ چار سالہ کورس "فاضل طب و جراحت" میں مجوزہ داخلہ فارم پر درخواستیں مطلوب ہیں۔
درخواست کے ہمراہ 6عدد میٹرک کی کاپیاں۔
2 عدد قومی شناختی کارڈ کی کاپی اور
6 عدد پاسپورٹ سائز تصاویر آویزاں کریں۔
آن لائن داخلہ فارم پر کرنے کے لیے لنک پر کلک کریں۔
فارم پر کرنے سے قبل اپنی ایک عدد تصویر اور ایک عدد میٹرک کی سند / مارک شیٹ کی صاف سکین کاپی یا تصویر ہمراہ رکھیں۔
https://docs.google.com/forms/d/1M9VZoJFe_GFIKlCF00AVZUOim_Mc50_zgY3JgtTKZXA/edit

مزید معلومات کے لیے 5899587-0321
0334-7142128 پر رابطہ کریں۔
یا واٹس ایپ نمبر
0321-5899587
پر Admission لکھ کر سینڈ کریں اور چند سیکنڈ انتظار کریں آپکو مطلوبہ معلومات مل جائیں گی۔
پروفیسر حکیم عمران لودھی۔
پرنسپل اجمل طبیہ کالج، راولپنڈی۔
www.fb.com/atcpak

29/05/2020

علم التشریح۔ سال اول۔ حصہ اول۔اجمل طبیہ کالج۔

Intro to Anatomy. Part 1.

29/05/2020

علم التشریح۔ سال اول۔ حصہ سوم۔

Intro to Anatomy. Part 3.

29/05/2020

علم التشریح۔ سال اول۔ حصہ دوم۔ اجمل طبیہ کالج

Intro to Anatomy Part 2.

21/03/2020

[03/19/20]   رسول اللہ نے فرمایا
وباء والے علاقہ میں مت جاو۔ اور اگر وبائی علاقےمیں ھو تو علاقہ مت چھوڑو۔
اجمل طبیہ کالج۔

[03/10/20]   ابوبکر محمد بن زکریارازی

رازی اپنے دور کے عظیم حکیم، دانشور اور ماہر طبیب

معلومات شخصیت پیدائش حکیم محمد بن زکریا
250 ھ/ 854 ء
وفات بدھ 5 شعبان 313 ھ 26 اکتوبر 925 ء (عمر: 63 سال قمری، 61 سال شمسی)
موجودہ صوبہ ےتہران ، ایران

شہریت دولت عباسیہ

عملی زندگی
پیشہ ریاضی دان ، فلسفی، موجد، طبیب ،
زبان فارسی - عربی ۔
شعبۂ عمل طب۔
حکیم ابوبکر محمد بن زکریا الرازی (پیدائش: 854ء-وفات: 925ء) (Rasis /Rhazes) فارس سائنسدان ، ماہرِ طبیعیات، ہیئت دان اور فلسفی تھے۔

حالات زندگی
ابو بکر محمد ابن زکریا الرازی 250ھ./ 854 ء میں ایران کے رے شہر میں پیدا ہوئے اور اسی نسبت سے رازی کہلائے۔آپ نامور مسلمان عالم، طبیب ، فلسفی، ماہر علم نجوم اور کیمیا دان تھے۔ جالینوس العرب کے لقب سے مشہور ہوئے۔ کہا جاتا ہے کہ بقراط نے طب ایجاد کیا، جالینوس نے طب کا احیاء کیا، رازی نے متفرق سلسلہ ہائے طب کو جمع کر دیا اور ابن سینا نے تکمیل تک پہنچایا۔ جوانی میں موسیقی کے دلدادہ رہے پھر ادب و فلسفہ، ریاضی و نجوم اور کیمیا و طب میں خوب مہارت حاصل کی۔ پہلے رے پھر بغداد میں سرکاری شفاخانوں کے ناظم رہے۔ طب میں آپ کو وہ شہرت دوام ملی کہ آپ طب کے امام وقت ٹھہرے۔

کا رہائے نمایاں
دنیا کی تاریخ میں جہاں بہت سے طبیبوں کا نام آتاہے وہاں "ابوبکر محمد بن زکریا رازی" کا نام علم طب کے امام کی حیثیت سے لیا جاتاہے۔۔ جب زندگی کی ذمہ داریاں بڑھیں تو کیمیا گری کے فن کو اپنالیا۔ ان کا خیال تھا کہ کیمیا گری کی بدولت وہ کم قیمت دھاتوں کو سونے میں تبدیل کرکے بہت جلد امیر اور دولت مند بن جائیں گے۔ کیمیاگری کے جو طریقے اس زمانے میں مشہور تھے، ان میں مختلف جڑی بوٹیوں کو ملا کر دنوں بلکہ مہینوں تک دھات کو آگ پر رکھنا پڑتا تھا، زکریا رازی نے بھی یہی طریقہ اختیار کیا۔ دواؤں اور جڑی بوٹیوں کے حصول کے لیے انہیں دوا فروشوں کی دکانوں پر جانا پڑتا تھا۔ اس سلسلے میں ان کی ایک دوا فروش سے دوستی ہو گئی۔ چنانچہ وہ فرصت کے لمحات میں عموماً اس کی دکان پر بیٹھ جاتے۔ اس سے ان میں رفتہ رفتہ طب کے علم میں دلچسپی پیدا ہو گئی۔ ایک دن کیمیاگری کے شوق میں آگ کو پھونکیں مارے مارتے ان کی آنکھیں جھلس گئیں۔ وہ علاج کے لیے ایک طبیب کے پاس گئے۔ طبیب نے علاج کرنے کے لیے اچھی خاصی فیس طلب کی۔ اس وقت رازی کے ذہن میں یہ بات آئی کہ اصل کیمیا گری تو یہ ہے نہ کہ وہ جس میں وہ اب تک سرکھپاتے رہے۔ چنانچہ رازی نے اب اپنی توجہ علم طبِ کی تحصیل میں صرف کردی۔ وہ طب کی تعلیم حاصل کرنے کے لیے بغداد روانہ ہو گئے۔ بغداد میں اس وقت ’’فردوس الحکمت‘‘ کا نامور مصنف علی بن ربن طبری بقید حیات تھا۔ رازی نے اس بزرگ استاد سے طب کے تمام رموز سیکھے او ر بڑی محنت سے اس میں کمال حاصل کیا۔ 908عیسوی میں بغداد کے مرکزی شفا خانے میں، جو اس زمانے میں عالم اسلام کا سب سے بڑا شفا خانہ تھا، انہیں اعلیٰ افسر کا عہدہ پیش کیا گیا جہاں وہ 17 برس تک کام کرتے رہے۔ یہ عرصہ انہوں نے طبی تحقیقات اور تصنیف وتالیف میں گزارا۔ ان کی سب سے مشہور کتاب "حاوی" اسی زمانے کی یاد گار ہے۔ حاوی دراصل ایک عظیم طبی انسائیکلوپیڈیا ہے جس میں انہوں نے تمام طبی سائنس کو جو متقدمین کی کوششوں سے صدیوں میں مرتب ہوئی، ایک جگہ جمع کر دیا اور پھر اپنی ذاتی تحقیقات سے اس کی تکمیل کی۔

وفات
ابو ریحان البیرونی کے قول کے مطابق محمد بن زکریا الرازی نے بدھ5 شعبان 313 ھ مطابق 26 اکتوبر 925 عیسوی کو 61 سال شمسی کی عمر میں رے شہر میں وفات پائی۔

اہم تصانیف
رازی کی تصانیف سترہویں صدی عیسوی تک یورپ میں بڑی مستند تصور کی جاتی تھیں، ان کے تراجم لاطینی میں کیے گئے اور یورپ کی درسگاہوں میں بطور نصاب پڑھائی جاتی رہیں۔

کتاب الجدری والحصبہ
کتاب الحاوی
کتاب المنصوری

[03/10/20]   ہر دور میں باکمال اطبا و حکما ہوئے ہیں۔ جب زمانے کی ضروریات بڑھتی گئیں اور عقل انسانی روز بروز ترقی کرتی گئی تو معاملات زندگی میں ارتقا ہونے لگا۔ اس طرح طب نے بھی عظیم الشان ترقی کے مدارج طے کئے۔ تاریخ طب اسی ارتقائی تسلسل کا نام ہے۔ مختلف ادوار اور ممالک میں مختلف اقوام کے طبی ارتقا کی تاریخ مختصر پیرائے میں درج ذیل ہے۔ طب بابلی: تاریخی شواہد کے پتہ چلتا ہے کہ بابل اور نینوا میں طب کی ابتدا پانچ ہزار سال قبل مسیح سے بھی پہلے ہوئی۔ مگر وہاں بھی شروع میں مرض کی پیدائش کا سبب بھوت پریت یا دیوتاؤں کے قوانین کی خلاف ورزی کو گردانا جاتا، جس کے سبب دیوتا ناراض ہو کر انسان کو بیماری کا شکار کر دیتا۔ ماہرین آثار قدیمہ کو خشی کتبے اور مخطوطات ملے۔ ان میں مختلف امراض کے نسخہ جات کے ساتھ وہ جادو اور منتر بھی درج ہیں جو مرض کے بھوت کو دفع کرنے کے لیے واضع کیے گئے تھے۔ جھاڑ پھونک کے طریق علاج کے ساتھ مریض کو کسی چوراہے میں لٹا دیا جاتا تھا۔ پھر راہ گیر سے مریض کی کیفیت بیان کی جاتی تھی۔ اگر کوئی اس مرض کے بارے میں نسخہ جانتا تو وہ بتا دیتا۔ اس طرح جو مؤثر دوائیں اور علاج ہوتا تو اس کو چاندی اور تانبے کی تختیوں پر کندہ کر کے دیوتا کے گلے میں ڈال دیتے۔ اس زمانے میں طبیب صرف ایک ہی مرض کا علاج کرتا۔ پھر بتدریج ترقی ہوتی گئی۔ یہاں تک کہ مختلف شہروں میں طبی درس گاہیں اور شفاخانے قائم ہوتے گئے۔ لندن کے عجائب گھر میں جو خشی کتاب نامکمل حالت میں موجود ہے وہ ایک قدیم اور مستند کتاب سے نقل ہے ایک طبی مدرسے کے اساتذہ نے مرتب کیا۔ اس میں اکثر طویل نسخہ جات اور ایک ایک مرض کے کئی کئی علاج تحریر ہیں۔ نسخوں میں مرہموں، طلاؤں اور حقنوں کا ذکر ہے۔ اس زمانے میں چین اور ہندوستان میں بھی بابلی طب کے اثرات پہنچے۔ بابل کی تباہی کے بعد تہذیب و تمدن کے ساتھ ساتھ طب کی ترقی کا مرکز مصر بنا اور پھر اس کے بعد طب کے تین مختلف مراکز بن گئے۔ چین، مصر اور ہندوستان اور اپنے اپنے مقام پر الگ الگ ارتقائی مراحل طے کرنے لگے۔ مصری طب نے اپنے اصلی مرکز کے قریب ہونے کی وجہ سے زیادہ ترقی کی۔ طب مصری: طب کا قدیم ترین اور ابتدائی سرچشمہ مصر ہے جہاں اس کی بنیاد توہم پرستی اور جادوگری پر تھی۔ صدیوں پرانے مصری اہرام، مقبرے اور کھنڈرات کھودنے سے جو کتبات، تحریریں، مخطوطات اور فرعونوں کی حنوط شدہ لاشیں برآمد ہوئیں ان سے قدیم مصریوں کے تمدن و معاشرت اور پراسرار علوم پر کافی روشنی پڑتی ہے۔ چنانچہ قدیم مصری کتابوں سے ثابت ہوتا ہے کہ ایک قدیم مصری بادشاہ آتھوسس نے جس کا زمانہ حیات حضرت عیسیٰؑ سے چھ ہزار سال قبل ہے، علم طب پر ایک کتاب لکھی تھی۔ لیکن اس تحریر سے یہ بھی منکشف ہوتا ہے کہ اس زمانے میں مصر میں طب محض ایک علم تسخیر و جادوگری تھا۔ قدیم مصریوں کا عقیدہ تھا کہ مرض اور موت قدرتی اور لاعلاج ہیں وہ اسے مافوق القدرت قوتوں کی کارستانی سمجھتے تھے اور جنتر منتر سے ان کا علاج کرتے تھے۔ اگرچہ مصر میں علم طب کی ابتدا باطل پرستی سے شروع ہوئی لیکن آہستہ آہستہ ترقی ہوتی چلی گئی۔ اوہام پرستی کے لیے جہاں انہوں نے مختلف دیوتا بنا رکھے تھے وہاں طب کا بھی ایک دیوتا معین کر رکھا تھا۔ مصری اس بت کی پرستش کیا کرتے تھے۔ یمن میں اس دیوتا کا سب سے بڑا مندر تھا۔ اس مندر کے پجاری مریضوں کا علاج کیا کرتے تھے۔ علاج جنتر منتر سے کیا جاتا اور بعض کا علاج جڑی بوٹیوں سے بھی کرتے تھے۔ تاہم آہستہ آہستہ علم طب ترقی کرنے لگا۔ نامور اطبا نے اس کو مدون کیا۔ ہیروڈوٹس یونانی مورخ و سیاح نے حضرت عیسیٰؑ سے چار سو سال قبل ایشیائے کوچک ایران، شام اور مصر کا بڑا لمبا سفر کیا۔ وہ مصریوں کے نظام طب کی بڑی تعریف کرتا ہے۔ وہ لکھتا ہے کہ میں نے مصر میں سینکڑوں طبیب دیکھے جن میں سے بعض خاص خاص امراض کے علاج میں ممتاز تھے۔ چینی طب: چینی طبابت بھی روایتوں اور داستانوں سے شروع ہوئی ہے۔ اہل چین کے خیال میں ادویہ کے استعمال کو فروغ دینے والا پہلا شخص شہنشاہ ہوانگ ٹی تھا جس کا زمانہ ساڑھے تین ہزار قبل مسیح سے بھی زائد تھا۔ اس سے دیگر اشخاص نے اس علم کو حاصل کیا، اس علم کو ترقی دی اور خاص خاص قواعد تشخیص اور اصول اختراع کیے۔ قدیم چینی اطبا نبض شناسی اور تشخیص امراض میں واقفیت رکھتے تھے۔ لیکن تب علم جراحی سے ناواقف تھے۔ البتہ علم ادویہ سے ان کو خاص واقفیت تھی۔ چنانچہ علاوہ نباتیاتی ادویہ کے وہ حیوانی و جمادی ادویہ کا بھی استعمال کرتے تھے۔ مگر طب کو بحیثیت مجموعی چین میں کوئی خاص ترقی نہ تھی۔ جبکہ آج چینی طب انتہائی عروج پر ہے۔ چینی طب کے مایہ ناز طریقہ علاج ایکو پنکچر یعنی سوزن کاری نے دنیا کو محو حیرت میں ڈالا ہوا ہے۔ اس طریقہ علاج سے انسانی جسم میں سوئیاں چبھو کر مختلف امراض کا علاج کرتے ہیں۔ یہاں تک کہ جسم کو بے حس کرکے بغیر نشہ کے آپریشن کر لیتے ہیں۔ طب یونانی: یونان میں بھی طب کی ابتدا ویسے ہی ہوئی جیسے مصر میں ہوئی۔ چنانچہ قدیم یونانیوں میں شفا کا دیوتا واسقلی بیوس تھا۔ منادر میں اس دیوتا کے مجسموں کی پوجا کی جاتی تھی۔ ان منادر کے پجاری مریضوں کا علاج اس طرح کیا کرتے تھے کہ مندر کے بڑے کمرے میں مریض کو سلا دیا جاتا تھا اور اس حالت میں وہ خود دیوتا سے اپنے دکھ درد کا حال بیان کر کے اپنے لیے دوا تجویر کرا لیتا تھا۔ مریضوں کو علاج کے متعلق جو خواب آتے تھے وہ ان کے نزدیک نہایت پیچیدہ ہوتے تھے جن کی تعبیر صرف مندر کے پجاریوں کو کرنے کا اہل سمجھا جاتا تھا اور وہ علاج معالجہ کے ذمہ دار ہوتے تھے۔ جب مریض تندرست ہو جاتا تو وہ اپنے مریض کا حال قیمتی تختی پر لکھ کر اسے مندر میں رکھ دیتا تھا اور دیوتا کی نذر نیاز چڑھا کر رخصت ہو جاتا تھا۔ اس طرح پجاریوں کو مختلف امراض کی کیفیت اور علاج کا طریقہ معلوم ہوتا رہا اور بعد میں پجاریوں نے باقاعدہ مریضوں کا علاج شروع کر دیا۔ یونان میں سب سے پہلے اسقلی بیوس نے باضابطہ علاج شروع کیا اور عوام میں اس کے سحرانگیز معالجات کی بڑی شہرت ہوئی اور اہل یونان اس کو موجد طب اور شفا کا دیوتا تسلیم کرنے لگے۔ اسقلی بیوس کے بعد فیثاغورث نے علم طب کو یونان میں رواج دیا۔ لیکن اس کی باقاعدہ تدوین بقراط کے زمانے میں ہوئی۔ اس نے دیگر علوم کی طرح طب کو بھی یکجا مدون کیا۔ اس لیے تدوین کا سہرا بقراط کے سر ہے۔ اخلاط اربعہ کا نظریہ سب سے پہلے اسی نے قلم بند کیا۔ جسم پر آب و ہوا کے اثرات اور تناسب اخلاط کے اثرات کو بھی اس نے تفصیل سے واضح کیا۔ اعضائے بدن، امراض بدن، جراحیات، معالجات، فصد اور حفظ صحت پر اس نے مختلف کتابیں لکھیں۔ بقراط کے بعد مختلف طبیبوں نے طب میں اضافے کئے۔ ارسطاطاپس نے طب کے اصول کلی کو منضبط کیا۔ دیسقوریدوس نے علم الادویہ کو ترتیب دیا اور جالینوس نے تشریح و مناضع الاعضا کا اضافہ کیا۔ جالینوس نے طب یونانی کو ایک مکمل علم کی شکل میں ترتیب دیا۔ دیگر قدیم طب میں طب ہندی، طب ایرانی اور طب رومی شامل ہیں۔۔۔۔

Videos (show all)

علم التشریح۔ سال اول۔ حصہ اول۔اجمل طبیہ کالج۔
علم التشریح۔ سال اول۔ حصہ سوم۔
علم التشریح۔ سال اول۔ حصہ دوم۔ اجمل طبیہ کالج
The Leaders and Tibb.
Group Photos of Final year 2007 to 2017.Staff and Students.
Anatomy of Liver.

Location

Products

Established in 1893.
Registration
After successful completion of four years course, The National Council For Tibb, Ministry of Health, Government of Pakistan awarded a diploma to the students named “FAZIL-E-TIBB WAL JARHAT (F.T.J) ” and registered as Unani Medical Practitioner.

On the base of this diploma and registration the Hakeem (Practitioners) may be able to practice through out the Pakistan. Hakeems may also practice in India, Bangladesh, Srilanka, South Africa, UAE, Arabia, England, and European Union after fulfilling local legal requirements. He or She may apply for job in different hospitals and dispensaries of Government, Semi-Government, District Government and in private sector such as Hamdard, Qarshi, Ajmal, Ashraf, Marhaba, etc. He or She may also join the field of pharmacy, and Lecturer ship in Tibbia colleges.

Ajmal Tibbia College Rawalpindi © 1893-2021

Telephone

Address


Ajmal Tibbia College. New Mulpur, 7th Road, Opposite Masjid Dadan Khan. اجمل طبیہ کالج۔ نیو ملپور۔ 7th روڈ۔ بلمقابل مسجد دادن خان۔
Rawalpindi
46000

General information

بسم اللہ الرحمن الرحیم۔ OUR STORY, OUR HISTORY, OUR DETAIL Welcome to Ajmal Tibbia College, Rawalpindi, Pakistan. Ajmal Tibbia College was Established in 1893 in Amritsar, United India as medical school named "Mudrassa Tibbia". It was upgraded in 1937 and converted into college. The college was shifted in Rawalpindi in 1947 after creation of Pakistan. The college was registered and affiliated with National Council for Tibb, Ministry of Health, Government of Pakistan in 1968 after implementation of Unani, Ayurvedic and Homeopathic Practitioners Act 1965. The college offered four years course "Fazil Tibb wal Jarahat" F.T.J. AJMAL TIBBIA COLLEGE. (Registered) The College was started as Medical School named “Mudrassa Tibbia” in Amratsar under the Ajmal Tibbi Association in 1893, for the purpose of solving the health problems of the poor people of united India. The School was inaugurated by Mr. Abu Turab Muhammad Abdul Haq Khan, the then president of the association. In 1936, after the reservation passed by the members of Association, the medical school was upgraded as medical college named Ajmal Tibbia College. It was established on August 01, 1937 in Amratsar. Dr. Abul Fazal M.A. (Raees-e-Azam) Mayor of Kapoor Thala inaugurated this college. After the independence of Pakistan, the college was shifted to Rawalpindi in 1947. The Government of Pakistan implemented Unani, Ayurvedic and Homeopathic Practitioners Act 1965 in 1967 and Ajmal Tibbia College was registered due to his high quality standard of education and administration by Board of Unani & Ayurvedic System of Medicine (Latter National Council For Tibb) Ministry of Health, Government of Pakistan vid Letter No- F-1-20/65/ UAH dated February 03, 1968. Since then the final examination conducted by the board/Council every year and the said college hold positions so many time through out the Pakistan. Principals of College: 1. Hakeem Abu Turaab Muhammad Abdul Haq-1893 to 1949. 2. Hakeem Shaikh Ghulam Muhammad-1949 to 1954. 3. Hakeem Malik Hakim-ud-Din....1954 to 1955. 4. Hakeem Shafi-ud- Din........1955 to 1958. 5. Hakeem Muhi-ud-Din.........1958 to 1960. 6. Hakeem Shafi-ud-Din.........1960 to 1967. 7. Hakeem Ehsan ul Haq Lodhi..1967 to 1980 8. Hakeem Muzaffar ul Haq Lodhi (Acting).1980 to 1980. 9. Hakeem Hafiz Rafiq Khan Awan..1980 to 1983. 10. Hakeem Muzaffar ul Haq Lodhi.1983 to 2006. 11. Hakeem Imran Lodhi......2006-till date. Faculty Members of the faculty of the college are experienced, professional, hard worker, devoted and highly educated both in general and professional education. They tried his best to provide maximum knowledge and practical experience to the students during the education period. Following distinguished and well known professional practitioners of the city are member of the faculty of the Ajmal Tibbia College. Course/ Syllabus: First Profession. 1. Anatomy. 2. Physiology. 3. Medicines. 4. Hygiene. 5. History of Tibb. 6. Kulyat (Principles). Second Profession. 1. Anatomy. 2. Physiology. 3. Medicines. 4. Pharmacy. 5. Therapeutics. 6. Kulyat (Principles). Third Profession. 1. Pathology. 2. Clinics & Formulation. 3. Therapeutics. 4. Diagnosis. 5. Obstetrics. 6. Medical Jurisprudence & Toxicology. Final Profession. 1. Minor Surgery. 2. Clinics & Formulation. 3. Therapeutics. 4. Clinical Psychology. 5. Gynecology & Pediatrics. 6. Infectious Diseases. The Course of the College consists of four years based on annual system. The session starts on July and ends on June after annual exams every year. This course is approved and notified by National Council for Tibb, Ministry of Health, Government of Pakistan. Specialty: The way of teaching, college has adopted is the combination of both traditional and modern techniques. We use traditional ways such as Pulse, Urine, Stool, Sputum, Saliva and physical examination, and Modern techniques such as ECG, Electronic Microscopes, Clinical Laboratory Tests, and Latest Equipment for the purpose of diagnose the disease. We also use Overhead projector, Slide Projector and other latest machinery such as Video Cassette Player, Television, Computer CD’s and Internet. Additional lectures from the Prominent Practitioners of the country on specific topics for the students during session are plus point. RESULTS.. Result of Last so many years. Year..... Total .....Pass.....Pass 1989..... 295........285........96.6 1990......323........303........93.8 1991..... 349........339.......97.1 1992..... 384........372........96.8 1993..... 438........413.......94.2 1994..... 454........433........95.3 1995..... 422........410........97.1 1996..... 471........455........96.6 1997..... 416........364........87.5 1998..... 338........312..........92.3 1999..... 318........310.........97.4 2000..... 332........298.........89.7 2001..... 324........306.........94.4 2002..... 323........301........93.1 2003.... .314........290........92.3 2004......266........244…....91.7 2005......297.........283.....95.28 2006.... .243........235......96.70 2007.... ,200.........197.......98.5 2008.....,213.........198......92.95 2009....,191.........182......95.28 2010.....186.........172......92.47 2011.....177.........172......97.17 2012.....188........175.......93.08 2013.....195........189.......97.01 2014..…,202…......…189…...93.56 2015…..,193......……183….…94.81 2016…...193….....…193…....…100 2017…..213.....……201…....94.36 2018..…237…....….223….....94.1 2019….256…......….246……..96.1 Qualification for Admission: 1. Matric with Science (as per requirement by National Council for Tibb, Govt of Pakistan). 2. Maximum Age 45 Years Requirement for Admission: S.S.C (Matric) copies 6. I.D card 2 copy. Passport size Photos 6. Medium of Instruction…Urdu. Specialty: Free Books No Hidden Charges Friendly Environment Experienced, Trained, Professional and Qualified Teaching Staff. Affordable Fee Structure. Air Condition Class Rooms. 100% Result 1st Position in Pakistan Study with Models, Charts, Projector, and other latest Video techniques. Special Sunday Classes. Special Attention on Anatomy, Physiology, Kulyat, Pharmacology (Medicines), Pharmacy, Pathology, Clinic & Formulation, Therapeutics, Diagnosis, Minor Surgery, Gynecology & Pediatrics. Clinical Laboratory. For Clinical Test. Samples of Medicinal Plants. Library consist of 3000 related books. Practical. Oldest and Historical WHY AJMAL TIBBIA COLLEGE FOR STUDY. The history consist of 127 years, one of the oldest Tibbia College in Pakistan. The glories 127 years provided a large number of students for the serving of humanity, our students spread not only over Pakistan but also many countries of the world. They serve in different Government, Sami Government, District, Tehsil Government, and Private Organizations in large number. Thousands of our students also practicing privately throughout country such as Rawalpindi, Islamabad, Karachi, KPK( Bannu, D.I.Khan, Kohat, Tul, Hangoo, Kark, Peshawer, Haripur, Hawellian, Abbotabad, Nathia Galli, Mansera, Balakot, Mardan, Swat etc) Punjab( Rawalpindi, Attock, Jhelum, Chakwal, Gujrat, Gujrawala, Hafizabad, Lahore, Kassur, D.G. Khan, Khushab, M.B.Din, Mianwali, Multan, R.Y.Khan, Sargodha, Sialkot Districts) Ajad Kashmir ( Muzafarabad, Bagh, Bhimber, Kotli, Mirpur, Neelum and Poonch Districts) Gilgit Bultistan ( Gilgit, Skardu) Our Students also worked or working As Principals of different Tibbia Colleges such as Ajmal, Rawalpindi, Islamabad, Fazal, Gujrawala, A.R memorial, Mardan As Professors, Assistant Professors in different Tibbia Colleges such as Ajmal, Rawalpindi, Islamabad, Fazal, Gujrawala, Sultan, A.R Memorial, Islami unani, Khawateen, Khyber, Mardan, Layyah As Member (Elected, Nominated) National Council for Tibb, Government of Pakistan As Member of Hajj Medical Mission (Almost every time). As Tibb Medical Officer in Different District Headquarters Hospital in Punjab, KPK and Azad Kashmir. As Tibb Medical Officer in Different Tehsil Headquarters Hospital in Punjab, KPK and Azad Kashmir. As Hakeem in Qarshi Dawakhan, Dispensaries, Industry, Hamdard, Markaz and Matab, Wasay, Lasani, Bio-Herbs and so many other reputed Tibbi Companies. Practicing as Hakeem in Abroad such as in Europe( England, Spain, Italy) Middle East ( Dubai, Sharjah, Saudia) Africa (South Africa) Asia (Malaysia) America ( United States and Canada). Finally we say that Ajmal Tibbia College is the Oldest, Historical, Trend Setter, Leading and Mother Institute of Traditional, Complementary and Alternative medicines Tibb-e-Unani. The Name that People Trust 4 Years Here A Future Forever Thank you for visiting our page and Welcome again in College. Professor Hakeem Imran Lodhi. Principal. 0321-5899587 0334-7142128 E-mail: [email protected] Ajmal Tibbia College Rawalpindi © 1893-2020

Opening Hours

Monday 09:00 - 13:30
Tuesday 09:00 - 13:30
Wednesday 09:00 - 13:30
Thursday 09:00 - 13:30
Friday 09:00 - 12:00
Saturday 09:00 - 13:30
Other Alternative & Holistic Health in Rawalpindi (show all)
Dynamic Health Bridge Dynamic Health Bridge
Murree Road
Rawalpindi, 46000

We are working as web based health related information exchange service provider.

AL-Ghufran Hijamah Center Rawalpindi AL-Ghufran Hijamah Center Rawalpindi
Street #18, Madina Market, Gulzar-e-Quaid
Rawalpindi, 46000

AL GHUFRAN Hijamah Center Gulzar-e-Quaid, Rawalpindi, Pakistan ~ Pioneers of Hijamah treatment in Rwp/Isb. ~ A Team of qualified male & female Doctors. ~ Hygienic working environment. ~ Visit us to feel the difference. Call us: +92-315-5115035

Hakeem Saif Ur Rehman Hakeem Saif Ur Rehman
Dhoke Ratta Rawalpindi, Near Masjid Taza Gull
Rawalpindi, 0315-9560427

Treatment through diet (dietotherapy). You are what you Eat.

Hijama Hijama
Alhijama Clinic Near Jinnah Park Opposite Askari 10 Jhunda
Rawalpindi, 46000

hijama is Sunnah of Holly Prophet Muhammad Peace Be Upon Him. The Sunnah Days for Hijama are 17,19, 21 of islamic calendar. it's also called blood cupping

Body Plus Course Body Plus Course
Rawalpindi
Rawalpindi, 46000

Havi Homeopathic Clinic Havi Homeopathic Clinic
The MidCity Mall, Murree Road
Rawalpindi, 46000

Best Homeopathic Clinic in the town!

Reiki healing and beauty care Reiki healing and beauty care
House#16,st#9,River Gardens Islamabad On Express High Way.
Rawalpindi, 46000

clinic is aimed to provide reiky treatment to the desiring individuals. also yoga classes are arranged for the yoga lovers.

Canadian Diabetes Clinic Canadian Diabetes Clinic
Chaklala Scheme 3
Rawalpindi

At CDC our mission is to provide superior treatment and compassionate care. We are providing the highest level of care in a peaceful and healing environment. We ensure each patient receives the highest level of care possible.

Homoeopathic Dr. Rehan's Family Clinic Homoeopathic Dr. Rehan's Family Clinic
Street No. 3 Ayub Colony, Khayyaban-e-Tanveer, Chaklala Scheme III,
Rawalpindi, 46000

We HELP you to fight disease and WIN in life.

The Herbal Clinic The Herbal Clinic
Near Muslim High School, Ajmal Tibbia College, Saidpur Road
Rawalpindi, 46000

health related problems and there herbal treatments, all without side effects 100% pure herbal medicines, & complete treatments

ھادی دواخانہ ھادی دواخانہ
Shop # 13, Zakki Shah Plaza, Kurri Road, Near Transformer Chowk, Sadiqabad
Rawalpindi, 44000

ھادی دواخانہ۔ راولپنڈی-پاکستان نیچرل وے آف ٹریٹمنٹ قدرتی طریقہ علاج

Pakistan National Heart Association (PANAH) Pakistan National Heart Association (PANAH)
Miltory Hospital AFIC / NIHD, The Mall
Rawalpindi, 46000

PANAH is a non Political, non-sectarian, voluntary association endeavoring to create awareness for prevention and care against heart diseases since 1984